ضم اضلاع کے طلباء کا گورنر ہاوس پنجاب کے سامنے احتجاجی کیمپ

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

عوامی نیشنل پارٹی جنوبی وزیرستان کے رہنما تاج وزیر نے کہا ہے کہ بہاوالدین زکریا یونیورسٹی سے تعلق رکھنے والے ضم اضلاع کے طالبعلوں نے نشستوں کی بحالی کیلئے گورنر ہاوس کے سامنے کیمپ لگایا ہوا ہے اور مطالبہ کررہے ہیں کہ انضمام کے وقت وعدہ کیا گیا تھا کہ جامعات میں انکے لئے مخصوص کوٹہ بحال رکھا جائیگا لیکن اب وہ ختم کردیا گیا ہے۔

تاج وزیر کا کہنا تھا کہ عوام اور بالخصوص طلبہ و طالبات کو انضمام سے بدظن کرنے کی سازش رچائی جارہی ہے۔ یونیورسٹیوں میں ضم اضلاع کے طلبہ و طالبات کیلئے مخصوصی کوٹہ مقرر کیا گیا تھا کیونکہ پسماندہ اضلاع سے تعلق رکھنے والے لوگوں کیلئے اپنے علاقوں میں یونیورسٹیاں اور کالجز نہ ہونے کے برابر ہیں۔

انہوں نے وزیراعلیٰ پنجاب سے مطالبہ کیا کہ ضم اضلاع کے عوام پہلے ہی متاثر ہوچکے ہیں اور انہیں مزیر خراب ہونے سے بچایا جائے۔صوبائی حکومت کی ذمہ داری بنتی ہے کہ گورنر اور وزیر اعلی فی الفور اس معاملہ میں مداخلت کرکے طلباء کو ذہنی اور جسمانی پریشانی سے بچائیں۔

انہوں نے کہا کہ بے نام اور بے حس حکومت کی وجہ سے ہمارا قیمتی اثاثہ یعنی نوجوان سڑکوں پر احتجاج کرنے میں مصروف ہیں جس ان کی تعلیمی سرگرمیوں سمیت توانائی بھی ضائع ہورہی ہے۔