قبائلی اضلاع کی اقلیتی برادری کےلئے مالی امداد سمیت ملکی و غیرملکی دوروں پر بھیجنے کی تجویز

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

پشاور (ویب ڈیسک) خیبر پختونخوا حکومت نے قبائلی اضلاع کی اقلیتی برادری کو ویلفیئر پیکج کی فراہمی، جہیز، میڈیکل اور بیوائوں کو مالی امداد دینے سمیت اقلیتی عبادت گاہوں سمیت مساجد کو شمسی توانائی پر منتقل کرنے کی منظوری دیدی ہے اسی طرح قبائلی اضلاع کے اقلیتی برادری کے نوجوانوں کو ملکی اور غیر ملکی دوروں پر بھیجنے کی تجویز بھی پیش کر دی گئی ہے جس کی حتمی منظوری صوبائی حکومت دیگی ۔

ذرائع کے مطابق صوبائی کابینہ کے اجلاس میں قبائلی اضلاع کی اقلیتی برادری کیلئے 15کروڑ روپے مالی سال 2019-20کے ترقیاتی پروگرام کے تحت منظور کئے گئے ہیں جن میں ویلفیئر پیکج کی فراہمی، اقلیتی بچیوں کے جہیز ، میڈیکل اور بیوائوں کیلئے مالی امدادسمیت اقلیتی نوجوانوں کے دورے شامل ہیں ذرائع کے مطابق محکمہ اوقاف مذہبی و اقلیتی امور اس مرتبہ اقلیتی نوجوانوں کو اندرون ملک سمیت بیرون ممالک کے دورے کرانے کی منصوبہ بندی بھی کر رہی ہے تاہم اس کی حتمی منظور صوبائی حکومت دے گی

رواں مالی سال کے دوران قبائلی اضلاع کی اقلیتی برادری کیلئے 28شعبوں میں تکنیکی تربیت کی فراہمی بھی شروع کی جائیگی جس میں بیوٹیشن، ہیوی مشینری کے استعمال ، ایل ٹی وی اور ایچ ٹی وی ڈرائیونگ، ٹیلرنگ اور موبائل فون کی مرمت سمیت دیگر شعبے شامل ہیں اسی طرح اقلیتی بچوں کو تعلیم کیلئے سکالر شپ بھی اسی فنڈ سے فراہم کی جائیگی ذرائع کے مطابق صوبائی حکومت نے قبائلی ضلاع کی مساجد اور اقلیتی برادری کی عبادت گاہوں کو شمسی توانائی پر منتقل کرنے کیلئے بھی 15کروڑ روپے منظور کر لئے ہیںمجموعی طور پر 30کروڑ روپے قبائلی اضلاع کیلئے منظور کئے گئے ہیں واضح رہے کہ اس سے قبل قبائلی اضلاع میں اقلیتی برادری کے مذہبی تہوار منانے کیلئے 30لاکھ جبکہ مذہبی مقامات کی بحالی، مرمت اور تعمیر نو کیلئے صوبائی حکومت 40لاکھ روپے بھی منظور کر چکی ہے ۔