کورونا ایس او پیز کا نفاذ، طورخم پر تجارتی سرگرمیاں کم ہو گئیں

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

طورخم سرحد پر کورونا ایس او پیز کے نفاذ کے بعد سے دوطرفہ تجارتی سرگرمیاں کم ہو گئیں، کسٹم کلیئرنس میں سستی کے باعث سرحد کے دونوں جانب 12 ہزار مال بردار گاڑیاں پھنس گئی ہیں۔

کورونا وبائی مرض سے قبل طورخم سرحد سے تجارتی سرگرمیاں دن رات جاری تھیں، روزانہ سرحد کے دونوں اطراف ڈیڑھ ہزار مال بردار گاڑیاں سفر کرتی تھیں، تاہم کورونا ایس او پییز کے نفاذ کے بعد اب یہ تعداد 300 تک محدود ہو گئی ہے۔

کسٹم کلیئرنس میں سستی کے باعث پشاور سے طورخم تک 7 ہزار جبکہ دوسری جانب 5 ہزار مال برادر گاڑیاں کلیئرنس کے انتظار میں کھڑی ہیں، جس سے ٹرانسپورٹرز کو شدید پریشانی کا سامنا ہے۔

اس صورتحال میں ٹرانسپورٹرز نے مطالبہ ہے کہ وزیراعظم کے 24/7 منصوبے کو بحال کیا جائے تاکہ سرحد پر پھنسی ہزاروں گاڑیوں کی کسٹم کلیئرنس ممکن ہو سکے اور تجارتی سرگرمیوں کی بحالی سے تجارتی خسارہ کم کیا جا سکے۔