عوضی خاصہ داروں کا احتجاجی مظاہرہ

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

قبائلی ضلع خیبرکی تحصیل جمرود میں کام کرنے والے عوضی خاصہ داروں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ ریگولر خاصہ دار فورس و لیویز فورس کی طرح انکو بھی پولیس میں ضم کیا جائے۔

اس سلسلے میں آج انہوں نے جمرود پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا۔ مظاہرے کے دوران انکا کہنا تھا کہ ضلع خیبر کی تحصیل جمرود میں کم و بیش آٹھ سو عوضی خاصہ دار اہلکار خدمات سرانجام دے رہے ہیں، انہوں نے کہا کہ انہوں نے ملک و قوم کے لئے بیش بہا قربانیاں دی ہے اور دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاک فوج کے شانہ بشانہ فرنٹ لائن پر لڑے ہیں۔

احتجاج کرنے والے اہلکاروں کا کہنا تھا کہ پولیو مہم میں بھی چیلنجز کے باوجود ناسازگار حالات میں دور دراز کے علاقوں میں ڈیوٹیاں کی ہے اور دوران ڈیوٹی اپنے خدمات کی انجام دہی میں اٹھائیس بندوں سے زیادہ جانوں کی شہادتیں دی ہیں جبکہ چالیس سے زیادہ زخمی ہوئے ہیں لیکن حکومت کی طرف سے ہمیں کوئی امداد نہیں ملا ہے اور نہ ہی کوئی شہید پیکیج ملا ہے، اس کے باوجود ہم اس ملک و قوم کے بہتر مستبقل کے لئے خدمات سرانجام دے رہے ہیں۔

انکا کہنا تھا کہ چونکہ اب قبائلی اضلاع خیبر پختونخواہ میں ضم ہوچکے ہیں تو اس لئے ریگولر خاصہ دار فورس و لیویز فورس کی طرح عوضی خاصہ دار فورس کو بھی پولیس میں ضم کیا جائے تاکہ ان کے خاندانوں کے چولہے مانند نہ پڑے۔ انہوں نے یہ بھی مطالبہ کیا ہے کہ عوضی خاصہ دار فورس کی قربانیوں کو مد نظر رکھتے ہوئے انکو لیویز یا پولیس فورس میں ملازمت دی جائے اور نئی ملازمت کے لئے عمر کی حد میں بھی رعایت دی جائے۔