ریڑھی بانوں کو دوکانوں کی غیرقانونی الاٹمنٹ پر ٹی ایم او بنوں معطل

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

خیبرپختونخوا کے محکمہ بلدیات نے تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن کی پراپرٹی کو غیر قانونی طریقے سے الاٹ کرنے اور ضلعی انتظامیہ سے تعاون نہ کرنے کے الزام میں بنوں کے تحصیل میونسپل افسر کو معطل کردیا ہے جبکہ وفاقی محتسب ادارے نیب نے متعلقہ کرپشن کیس کی تحقیقات بھی شروع کردی ہے۔

ٹی ایم او بنوں کی معطلی پر وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کے معاون بلدیات کامران خان بنگش نے کہا ہے کہ انہیں فوری طور پر کام کرنے سے روک دیا گیا ہے جبکہ چارج شیٹ مقررہ ٹایم فریم کے مطابق جاری کیا جائے گا۔ انہوں نے وضاحت کی کہ معطل ٹی ایم او روف اللہ گریڈ 19 کا انتظامی کیڈر افسر ہے اور اسکی معطلی کی بنیادی وجہ نااہلی اور اختیارات کا ناجائز استمال ہے۔

دوسری جانب نیب نے بھی ٹی ایم اے بنوں کے خلاف ریفرنس دائر کیا ہے۔ ریفرنس میں کہا گیا ہے کہ محکمے کے افسران 20 ملین روپے غائب کرنے کے کرپشن میں ملوث ہیں۔

نیب ریفرنس میں الزام عائد کیا ہے کہ ٹی ایم اے ملازمین نے 76 ریڑھی بانوں سے منڈی میں دوکانیں الاٹ کرنے کے نام پر اس سے رقم ہڑپ کی گئی ہے۔

بنوں میں تحصیل میونسپل انتظامیہ کی ذمہ داری بارے بات کرتے ہوئے معاون خصوصی نے کہا کہ ریجنل میونسپل آفیسر بنوں کو اضافی چارج دیا گیا ہے۔ کیونکہ عوامی اثاثہ جات کی تحظ پر کسی قسم سمجھوتہ نہیں کریں گے۔ کچھ دنوں پہلے مردان میں بھی محکمہ بلدیات کے آفیسرز کے خلاف کاروائی کی گئی تھی۔

معاون خصوصی نے محکمہ بلدیات کے ملازمین کو تنبیہہ کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ محکمہ بلدیات کو کرپشن فری بنا کر ہی دم لوں گا۔ ہر ایک تحصیل میونسپل آفیسر کی کارکردگی جانچ رہا ہوں۔ یا تو سدھر جائیں یا گھر جائیں