ضم اضلاع : منشیات کی کاشت اور سمگلنگ کا خاتمہ کیا جائے گا۔ آئی جی

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

انسپکٹر جنرل آف پولیس خیبر پختونخواہ ڈاکٹر ثناءاللہ عباسی نے کہا ہے کہ قبائلی اضلاع میں پوست اور بھنگ کی فصل کو کاشت کرنے کی کسی کو اجازت نہیں دیں گے۔

اپنے دفتر میں ملاقات کے موقع پر آئی جی ثناءاللہ عباسی نے اورکزئی میڈیا ٹیم سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ منشیات کاشت کرنا تجارت نہیں جرم ہے، تمام اضلاع میں منشیات کی کاشت اور سمگلنگ کا خاتمہ کیا جائے گا۔

آئی جی پی کے مطابق اسی فیصد لیویز اور خاصہ دار فورس پولیس میں ضم ہو چکی ہے باقی بیس فیصد بھی جلد ضم ہو جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ سابقہ فاٹا میں پاک فوج کی بارڈر پر فیسنگ اور پولیس آنے سے کراس بارڈرپر دہشت گردی میں کمی آئی ہے پھر بھی بعض قبائلی اضلاع میں دہشت گرد افغانستان سے رابطے کر رہے ہیں۔

ثناء اللہ عباسی نے کہا کہ اربوں روپے کی لاگت سے قبائلی اضلاع میں تھانے پولیس لائنز اور دفاتر بنائے جائیں گے۔

ملاقات میں ائی جی ثناءاللہ عباسی نے اورکزئی میڈیا ٹیم کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ اورکزئی کا میڈیا بہترین طریقے سے اپنی ذمہ داریاں نبھا کر ملک اور علاقے کی خدمت کر رہا ہے۔

قبل ازیں اورکزئی میڈیا ٹیم کی قیادت کرنے والے صدر اورکزئی پریس کلب صالح دیں اورکزئی نے روایتی کلاہ بھی پہنایا۔