مہمند : اقلیتی برادری کے مستحق افراد میں امدادی چیک تقسیم

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

ضلع مہمند میں اقلیتوں کے مستحق افراد میں وفاقی حکومت کی جانب سے منظور شدہ امدادی چیک تقسیم کئے گئے، رکن صوبائی اسمبلی ولسن وزیر کے مطابق 10 ہزار روپے فی کس کے حساب سے 80 لاکھ روپے 8 سو افراد میں تقسیم کئے جائیں گے جس میں خواتین بھی شامل ہیں، آغاز مہمند ضلع سے کیا ہے۔

اس سلسلے میں ضلع مہمند کے ہیڈکوارٹر غلنئ میں ایک تقریب منعقد ہوئی جس میں خیبر ضلع سے اقلیتی رکن صوبائی اسمبلی ولسن وزیر مہمان خصوصی تھے اور باجوڑ اقلیتی برادری کے صدر وقار مسیح اور مہمند کے صدر عثمان مسیح کے علاوہ مہمند اور باجوڑ کے اقلیتی برادری کے مرد خواتین اور نوجوان بھی موجود تھے۔

اس موقع پر ولسن وزیر نے مہمند اور باجوڑ کے اقلیتی برادری کے مرد اور خواتین میں 10/10 ہزار روپے کے چیک تقسیم کئے۔

تقریب سے اپنے خطاب میں ولسن وزیر کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت کی جانب سے مالی امداد کے تحت اقلیتی برادری کو 80 لاکھ روپے دیئے جارہے ہیں جو 8 سو لوگوں میں دس ہزار روپے فی کس کے حساب سے تقسیم کئے جائیں گے، مہمند سے آغاز کیا گیا ہے جبکہ تمام قبائلی اضلاع اور FR میں اقلیتی برادری کے مستحق مرد و خواتین میں بھی تقسیم کئے جائیں گے۔

ولسن وزیر نے کہا کہ حکومت نے 21۔2020 کے بجٹ میں قبائلی اضلاع میں مقیم اقلیتی برادری کے لئے خطیر رقم مختص کی ہے جس میں قبائلی اضلاع کے ہر ہیڈ کوارٹرز میں اقلیتی برادری کے لئے الگ الگ کالونی بنائی جائے گی اور ان کی عبادتگاہوں پر بھی خطیر رقم خرچ کی جائے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ اقلیتی برادری کیلئے میرج گرانٹ سکل ڈویلپمنٹ پروگرام، تعلیم اور صحت کے علاوہ اندرونی اور بیرونی ملک نوجوانوں کے مطالعاتی دورے بھی شامل ہیں۔

ویلسن وزیر نے کہا کہ صوبائی بجٹ کیلئے ہم نے فنانس ڈپارٹمنٹ کو اپنے مطالبات پیش کئے ہیں جس پر عمل کیا جائے گا، وفاقی بجٹ بھی عوام دوست بجٹ ہے جس میں کوئی ٹیکس نہیں لگایا گیا ہے، موجودہ حکومت میں اقلیتی برادری کے مسائل پر خصوصی توجہ دی جا رہی ہے۔