خیبر پختونخواہ میں صحتیابی کی شرح بھی باقی صوبوں سے زیادہ ہیں

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

وزیراعلیٰ کے مشیر اطلاعات اجمل وزیر نے کہا ہے کہ خیبرپختونخوا میں کورونا سے زیادہ اموات کی باتیں ہر کوئی کر رہا ہے لیکن یہ کوئی نہیں کہہ رہا کہ ملک کے باقی صوبوں کے مقابلے میں یہاں مریضوں کی صحتیابی کی شرح بھی زیادہ ہے۔

خیبرپختوںخوا میں گزشتہ دو دنوں میں 900 سے زیادہ کیسز سامنے آئے ہیں جبکہ گزشتہ دن صوبے میں ایک دن میں ریکارڈ 20 اموات بھی ہوئی تھی۔

پشاور میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے اجمل وزیر نے کہا کہ خیبرپختوںخوا میں کورونا کیسز میں اضافے کی ایک بڑی وجہ یہ بھی ہے کہ جب سے لاک ڈاؤن میں نرمی کی گئی ہے تب سے باہر ممالک سے 4000 مسافر صوبے کو آئے ہیں جن میں 700 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ مسافروں کو باقاعدہ طور پر قرنطین کردیا گیا ہے۔

مشیراطلاعات کا کہنا تھا کہ صوبے میں کورونا ٹسٹنگ کی صلاحیت بھی بڑھائی گئی ہے اور کیسز زیادہ ہونے کی ایک وجہ یہ بھی ہے۔

اجمل وزیر نے ڈاکٹروں سمیت تمام محکمہ صحت کے ملازمین کی قربانیوں کو سراہا اور کہا کہ یہ مہلک کورونا سے مقابلے میں یہ طبقہ ہمارے فرنٹ لائن کا کردار ادا کر رہا ہے جو کہ لائق تحسین ہے۔