پاکستان میں کورونا کے خلاف پیسیو امیونائزیشن کا تجربہ کامیاب رہا

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

ماہر امراض خون اور نیشنل انسٹیٹیوٹ آف بلڈ ڈیزیز ( این آئی بی ڈی) کے سربراہ ڈاکٹر طاہر شمسی کا کہنا ہے کہ پاکستان کیلئے اچھی خبر ہے کہ کورونا کیخلاف پیسیو امیونائزیشن کا تجربہ کامیاب رہا ہے۔ ڈاکٹر طاہر شمسی کاکہنا ہے کہ جتنے مریضوں کو پلازمہ لگایا گیا کسی کو سائیڈ ایفیکٹ نہیں ہوا، پاکستان میں اس کے حوصلہ افزا نتائج آئے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ امریکا میں پیسیو امیونائزیشن کے ذریعے 11 ہزار افراد صحت یاب ہوچکے ہیں۔ ڈاکٹر طاہر شمسی کا کہنا تھا کہ ہمیں 4 ہزار افراد کا پلازمہ چاہیے ہوگا،صحت یاب ہونے والے افراد آگے آئیں اور اپنا پلازمہ عطیہ کریں۔

خیال رہے کہ پاکستان میں کورونا سے متاثرہ افراد کی تعداد 45 ہزار سے تجاوز کرچکی ہے جب کہ 969 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ کورونا سے متعلق حکومتی ویب سائٹ کے مطابق ملک میں 12 ہزار سے زائد افراد وائرس سے صحت یاب ہوچکے ہیں۔

خیال رہے کہ ڈاکٹر طاہر شمسی کی تجویز پر ہی گذشتہ ماہ محکمہ صحت سندھ نے کورونا وائرس کے علاج کیلئے پیسیو امیونائزیشن کی اجازت دی تھی جب کہ وفاق اور دیگر صوبائی حکومتیں بھی اس کی اجازت دے چکی ہیں۔

اس طریقہ کار میں کورونا وائرس سے صحت یاب ہونے والے شخص کے خون سے اینٹی باڈیز لے کر متاثرہ شخص میں داخل کی جاتی ہیں اور یہ تجربہ کار اینٹی باڈیز وائرس کے خلاف جنگ میں متاثرہ شخص کی مدد کرتی ہیں۔