شمالی وزیرستان : دھماکے میں ایک فوجی شہید، 3 زخمی ہوگئے

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

خیبر پختونخوا کے قبائلی ضلع شمالی وزیرستان کے علاقے میرعلی کے قریب ایک پر ہجوم بازار میں دھمکا خیز ڈیوائس پھٹنے سے ایک فوجی جوان شہید، جبکہ دیگر 3 زخمی ہوگئے۔  پولیس نے عامر کے نام سے شناخت ہونے والی فوجی اہلکار کی شہادت کی تصدیق کی۔

مذکورہ دھماکا عیدیک بازار میں نظامیہ مسجد کے نزدیک ہوا۔ اس حوالے سے ایک بیان جاری کرتے ہوئے پولیس نے بتایا کہ دھماکے کے نتیجے میں بازار میں کھڑی کم از کم 14 گاڑیوں کو نقصان پہنچا۔

بیان میں کہا گیا کہ سکیورٹی فورسز بازار میں گشت کر رہی تھی جب ان کی گاڑی کے نزدیک ایک ریموٹ کنٹرولڈ ڈیوائس پھٹ گئی۔ پولیس کا کہنا تھا کہ واقعے میں حوالدار ارشد، سپاہی عبد المنان اور اسلام نبی زخمی ہوئے جنہیں علاقے کے ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔

دھماکے کے بعد میرعلی تا میرامشاہ شاہراہ ٹریفک کی آمدورفت کیلئے بند کر دی گئی اور فورسز نے سرچ آپریشن کیا۔ خیال رہے کہ 7 مئی کو شمالی وزیرستان میں ہی ایک سکیورٹی چیک پوسٹ پر راکٹ حملے میں پاک فوج کے 2 اہلکار شہید ہوگئے تھے۔

واضح رہے کہ گذشتہ ایک ماہ میں ضلع شمالی وزیرستان میں عسکریت پسندوں کے حملے میں 13 سکیورٹی اہلکار شہید، جبکہ 9 زخمی ہوئے ہیں۔ قبل ازیں 26 اپریل کو شمالی وزیرستان میں سکیورٹی فورسز کی جانب سے دہشت گردوں کے خلاف کی گئی کارروائی کے دوران پاک فوج کے دو جوان شہید ہوگئے تھے، جبکہ 9 دہشت گردوں کو بھی ہلاک کیا گیا تھا۔

اس سے قبل 14 اپریل کو شمالی وزیرستان میں سکیورٹی فورسز کے آپریشن کے دوران دہشت گردوں کی فائرنگ سے ایک فوجی اہلکار شہید ہوگیا تھا۔

11 اپریل کو شمالی وزیرستان میں تحصیل میر علی کے قریب فائرنگ کے تبادلے میں 2 سکیورٹی اہلکار شہید، جبکہ 7 عسکریت پسند ہلاک ہوگئے تھے۔ قبل ازیں 8 اپریل کو سکیورٹی فورسز نے خیبر پختونخوا کے قبائلی اضلاع شمالی وزیرستان اور مہمند میں کارروائی کرکے 7 دہشت گردوں کو ہلاک کر دیا تھا۔