ملک بھر میں تعلیمی ادارے 15 جولائی تک بند رکھنے کا فیصلہ

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

حکومت نے کورونا وائرس کے سبب ملک بھر میں تعلیمی ادارے 15 جولائی تک بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت ہونے والے قومی رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں تمام بورڈز کے امتحانات بھی منسوخ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اجلاس کے بعد وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے بتایا کہ قبل ازیں 13 مئی کو تعلیمی ادارے کھولنے جبکہ جون اور جولائی میں امتحانات لینے کا فیصلہ کیا گیا تھا، تاہم کورونا کی صورتحال مزید ابتر ہونے کے سبب ایسے فیصلے لینے پڑ رہے ہیں۔

وزیر تعلیم نے بتایا کہ اگلی جماعت میں پروموشن گذشتہ نتائج اور کارکردگی کی بنیاد پر کی جائے گی۔ خیال رہے کہ حکومت 26 مارچ کو تمام تعلیمی ادارے بند کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔ شفقت محمود نے کہا کہ چھٹیوں کو موسم گرما کی تعطیلات سمجھا جائے، اگر کورونا وائرس کا مسئلہ حل ہوگیا تو تعلیمی ادارے جون میں دوبارہ کھل جائیں گے۔

قومی رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں 9 مئی سے لاک ڈاؤن کھولنے کا فیصلہ بھی کیا گیا ہے، تاہم ٹرانسپورٹ کے متعلق صوبوں اور وفاق میں اتفاق نہیں ہوسکا۔ وفاقی وزیر اسد عمر نے بتایا کہ دکانیں سحری سے شام 5 بجے تک کھلی رہیں گی، تاہم رات کو دکانیں بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، تمام چھوٹے کاروبار اور دکانیں ہفتے میں 2 دن بند کیے جائیں گے۔

قومی رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں سرامکس، اسٹیل، کیبلز اور پینٹس انڈسٹری کھولنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، شہر کے گلی محلوں اور دیہاتوں کی دکانیں کھولنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اجلاس کے بعد قوم سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ احتیاط سے ہی وائرس کے اثرات پر قابو پایا جاسکتا ہے، عوام کی انفرادی ذمہ داری ہے کہ وہ خود احتیاط کریں، مشکل وقت سے نکلنا ہے تو ذمہ دار شہری بننا ہوگا۔