ضلع خیبر کے پولیس اہلکاروں کو شوکاز نوٹس جاری

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

ضلع خیبر میں بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے مستفید ہونے والے تین سو سے زائد پولیس اہلکاروں کو شوکاز نوٹس جاری کردیا گیا۔ ڈی پی او خیبر نے 3سو سے زائد پولیس اہلکاروں کو شوکاز نوٹس جاری کیا ہے۔ شوکاز نوٹس میں ان ان اہلکاروں کو کہا گیا ہے کہ اپ وضاحت دے دیں کہ سرکاری ملازم ہوتے ہوئے کیوں اس پروگرام سے مستفید ہوتے رہے۔

شوکاز نوٹس کے متن میں کہا گیا ہے کہ کاروائی پولیس ایکٹ1975کے تحت کاروائی عمل میں لائی گئی ہے اور متعلقہ پولیس اہلکاروں کو 7دن کے اندر وضاحت دینے کی ہدایت کی گئی ہے۔

بیشتر پولیس اہلکاروں کی بیویاں بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے مستفید ہو رہی تھی جس کے بعد بے نظیر انکم سپورٹ انتظامیہ نے پولیس اہلکاروں کی لسٹ ائی جی خیبر پختونخوا کو ارسال کی اور بعد ازاں ان کو شوکاز نوٹس جاری کردیا گیا۔

دستاویزات کے مطابق ضلع خیبر کے 302 پولیس اہلکار بی ائی ایس پی پروگرام سے مستفید ہورہے ہیں۔

واضح رہے کہ چند ماہ قبل بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام میں کرپشن کا انکشاف ہوا تھا جس کے بعد بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے فائدہ اٹھانے والے سرکاری افسران کیخلاف کارروائی کا آغاز کیا گیا اور پہلے مرحلے میں گریڈ17 کے چار افسران کو نوکری سے برطرف کر دیا گیا تھا۔

نوٹیفکیشن کے مطابق چاروں افسران بیگمات کے نام پر بینظیر انکم سپورٹ پروگرام سے وظیفہ لیتے رہے، افسران سے چار لاکھ 40 ہزار 196 روپے بھی ریکور کرلیے گئے۔ برطرف کیے گئے افسران میں نعمان ضحیم، شفیع اللہ، سید فضل امین اور سبیل خان شامل ہیں۔

چیئرپرسن بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام ڈاکٹر ثانیہ نشتر نے ٹوئیٹر پر جاری اپنی بیان میں لکھا کہ بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کے گریڈ 17 کے 4 افسران کو کرپشن ثابت ہونے پر نوکری سے برطرف کیا گیا، افسران سے چار لاکھ 40 ہزار 196 روپے بھی ریکور کرلیے گئے۔

بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے بیگمات کے نام پر وظیفہ لینے والے افسران کا تعلق ایبٹ آباد اور ڈی آئی خان سے ہے۔ چیئرپرسن بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام ڈاکٹر ثانیہ نشترکے مطابق ایک لاکھ 40 ہزار سرکاری ملازمین وظیفہ وصول کرنے والوں میں شامل تھے۔