کورونا : ملک میں 4187 متاثرین ، 58 جاں بحق، 467 صحتیاب

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت کوآرڈینیشن کمیٹی اجلاس میں کورونا وائرس کے باعث لگائے گئے لاک ڈاؤن کو بڑھانے یا ختم کرنے سے متعلق فیصلہ نہیں ہو سکا۔ میڈیا ذرائع کے مطابق وفاقی حکومت نےلاک ڈاؤن میں توسیع کا فیصلہ صوبائی حکومتوں پرچھوڑ دیا ہے۔ میڈیا ذرائع کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نےکورونا کیسزمیں اضافے پر طبی ماہرین کی تشویش سےآگاہ کیا۔

انہوں نے بتایا کہ نجی اسپتالوں کےمالکان اور طبی ماہرین نےلاک ڈاؤن میں توسیع کی تجویز دی ہے، کورونا کیسزکی تعداد خصوصاً لوکل ٹرانسمیشن میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ سندھ میں کورونا کیسزکی موجودہ شرح اور مستقبل کےخدشات تشویشناک ہیں۔

خیال رہے کہ  پاکستان میں کورونا وائرس کے سبب 58 افراد جاں بحق اور 4,187 متاثر ہو چکے ہیں، جبکہ 25 کی حالت تشویشناک ہے۔

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کی جانب سے جاری کردہ اعدادوشمار کے مطابق گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران 208  نئے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔

دستیاب اعداد و شمار کے مطابق پنجاب میں اس وقت کورونا کے 2132، سندھ 932 اور خیبرپختونخوا میں 500 کیسز رپورٹ ہو چکے ہیں۔ صوبہ بلوچستان میں 210 اور وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں 83 کورونا وائرس کے متاثرہ کیسز درج کیے گئے ہیں۔

گلگت بلتستان میں 211 اور آزاد کشمیر میں 28 کورونا وائرس سے متاثرہ کیسز کا انداراج کیا جا چکا ہے۔ پاکستان میں مجموعی طورپر کورونا کے 467 مریض صحتیاب ہوئے ہیں۔ کورونا وائرس  سے سندھ میں 18، پنجاب16، خیبرپختونخوا 18، اسلام آباد1، بلوچستان 2 اور گلگت بلتستان میں 3 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں۔

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے مطابق پاکستان میں کورونا کے 59  فیصد مریض بیرون ملک سے آئے ہیں اور 41 فیصد مقامی ہیں۔ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 3076 افراد کے ٹیسٹ کیے گئے ہیں۔  پاکستان میں کورونا کے 25 مریضوں کی حالت تشویشناک ہے۔

ملک بھر میں 462 اسپتالوں میں آئی سولیشن کی سہولت موجود ہے جن میں 7295 بیڈز موجود ہیں۔ اس وقت تک 328 قرنطینہ مراکز قائم کیے گئے ہیں جن میں 16737 مریضوں کو رکھا گیا ہے  نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر کے مطابق آٹھ ہزار 493 افراد کوگھروں میں قرنطینہ کی سہولت دی گئی ہے۔

پاکستان میں کورونا وائرس کا پھیلاؤ کم سے کم کرنے کے لیے جزوی لاک ڈاؤن کیا گیا ہے۔ ملک میں عوامی اجتماعات پر مکمل پابندی عائد ہے اور تعلیمی ادارے بند ہیں۔

دوسری جانب ٹورنٹو سے اسلام آباد آنے والے 25 مسافروں کی کورونا ٹیسٹ رپورٹ مثبت آ گئی ہے جس کے بعد سول ایوی ایشن اتھارٹی نے اسلام آباد ائیرپورٹ پرمسافروں کو سروسسز فراہم کرنے والے ملازمین کا ٹیسٹ کرانے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

اس حوالے سے سول ایوی ایشن اتھارٹی کے سینیئر جوائنٹ ڈائریکٹر میڈیکل ڈاکٹر اعجاز احمد کی جانب سے مراسلہ تحریر کر دیا گیا ہے۔

اسلام آباد میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے شیخ رشید احمد نے کہا کہ 14 اپریل کو لاک ڈاؤن ختم ہونے کے امکانات کم ہیں،لاک ڈاؤن ختم ہوتے ہی 20 سے 22 ٹرینیں فی الفور چلائی جائیں گی علاوہ ازیں عراق میں پھنسے 136 پاکستانی قومی ایئر لائن کی خصوصی پرواز کے ذریعے وطن واپس آگئے ہیں۔

پی آئی اے کی خصوصی پرواز پی کے 9814 عراق میں پھنسے 136 مسافروں کو لے کر اسلام آباد انٹر نیشنل ایئر پورٹ پہنچی۔ ڈاکٹروں کی خصوصی ٹیم نے مسافروں کا طبی معائنہ اور اسکریننگ کی۔