ضلع باجوڑ میں سب سے زیادہ ووٹ جماعت اسلامی کو ملے

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

قبائلی اضلاع میں صوبائی اسمبلی کے لئے ہونے والے انتخابات خوشگوار ماحول میں اپنے اختتام کو پہنچ گئے۔ ضلع باجوڑ کے تین حلقوں پر کل 39 امیدواروں نے مختلف پارٹیوں اور آزاد حیثیت سے انتخابات میں حصہ لیا جسمیں پی کے 100 سے پی ٹی آئی کے انورزیب خان نے 12951 ووٹ لے کر، پی کے 101پر پی ٹی آئی کے ایم این اے گلدادخان کے بھائی اجمل خان نے 12194 اور پی کے 102 پر جماعتِ اسلامی کے سراج خان نے 19088 ووٹ لیکر کامیابی حاصل کی۔

جماعتِ اسلامی کے مولانا وحیدگل 11775,جماعت اسلامی ہی کے ہارون رشید 10466 اور پی ٹی آئی کے ڈاکٹرحمید 13436 ووٹ لیکر بالترتیب پی کے 100، پی کے 101 اور پی کے 102 پر دوسرے نمبر پر رہے۔ 1250 مربع کلومیٹر پر محیط ضلع باجوڑ کی آبادی دس لاکھ تریانوے ہزار چھ سو چوراسی میں کل ووٹرز کی تعداد پانچ لاکھ چونتیس ہزار 3 ہیں جسمیں مجموعی طورپر 170415 ووٹ ڈالیں گئے جسکا مجموعی ٹرن اوٹ 31.91 فی صد رہا۔ تین حلقوں میں کل 3314 ووٹ کینسل ہوئے۔

اسی طرح ووٹوں کی اعتبار سے باجوڑ کی سب سے بڑی اور مقبول ترین پارٹی جماعتِ اسلامی رہی جسکو تین حلقوں پر مجموعی طور پر 41338 ووٹ ملیں۔ دوسرے نمبر پر 38581 ووٹ کیساتھ پاکستان تحریک انصاف رہی۔ تیسرے نمبر پر جمیعت علمائے اسلام ف کو 22484 ووٹ ملیں۔ جماعت اسلامی کے امیدوار سراج خان نے حلقہ 102 پر کامیابی حاصل کی جبکہ جماعت اسلامی کے امیدواروں نے حلقہ 100 اور حلقہ 101 پربھی اچھے ووٹ لے کر دوسری پوزیشن حاصل کی۔

الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری کردہ تفصیلات کے مطابق قبائلی اضلاع میں مجموعی ٹرن آوٹ 26.27فیصدرہا،سب سے زیادہ ٹرن آوٹ پی کے 109 کرم ایجنسی میں 40.10 فیصد رہا جبکہ سب سے کم ٹرن آوٹ پی کے113 شمالی وزیرستان میں 16.10فیصد رہا۔