کورونا وائرس : پاکستان میں متاثرہ افراد کی تعداد 1081 تک جاپہنچی

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

پاکستان میں کورونا وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد 8 ہوگئی جب کہ ملک بھر میں مجموعی کیسز کی تعداد 1081 تک جا پہنچی ہے۔ بدھ کے روز پاکستان میں کورونا وائرس سے آٹھویں ہلاکت ہوئی جہاں راولپنڈی میں زیر علاج خاتون انتقال کرگئی، خاتون بیرون ملک سے وطن واپس آئی تھیں اور 21 مارچ سے زیر علاج تھیں۔

خاتون کے انتقال سے پنجاب میں کورونا سے اب تک ہلاکتوں کی تعداد 2 ہوگئی ہے جب کہ اس سے قبل خیبرپختونخوا میں 3، بلوچستان، گلگت بلتستان اورسندھ میں ایک ایک ہلاکت ہوئی ہے۔

بدھ کو ملک میں مجموعی طور پر 87 کیسز رپورٹ ہوئے جن میں سے خیبرپختونخوا میں 43، پنجاب میں 27، بلوچستان میں 9، گلگت میں 4، سندھ میں 3 اور اسلام آباد میں ایک شخص میں مہلک وائرس کی تصدیق ہوئی۔

پاکستان میں مہلک وائرس سے اب تک 22 افراد صحتیاب ہوچکے ہیں جن میں سے 14 کا تعلق سندھ، 6 کا گلگت بلتستان اور 2 کا تعلق اسلام آباد سے ہے۔ آج بروز جمعرات پاکستان میں کورونا کے اب تک 4 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔

وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں کورونا کے مزید 4 کیسز سامنے آئے ہیں جو سرکاری پورٹل پر رپورٹ کیے گئے ہیں تاہم ضلعی انتظامیہ کی جانب سے ان کیسز کی کوئی تصدیق سامنے نہیں آئی ہے۔ سرکاری پورٹل پر 4 کیسز میں اضافے کے بعد اسلام آباد میں کورونا کے مجموعی کیسز کی تعداد 20 ہوگئی ہے۔

خیبر پختونخوا میں بدھ کو کورونا وائرس کے 43 کیسز رپورٹ ہوئے جس کے بعد صوبے میں مجموعی کیسز کی تعداد 121 ہوگئی ہے۔ گزشتہ روز خیبرپختونخوا کی تحصیل منگا میں 39 کیسز رپورٹ ہوئے جس کے بعد تحصیل میں کرفیو نافذ کرکے فوج تعینات کردی گئی ہے۔

سندھ میں بدھ کو صرف 3 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی جس کے بعد صوبے میں مجموعی تعداد 413 تک جاپہنچی ہے۔ بلوچستان میں بدھ کو کورونا وائرس کے مزید 9 کیسز سامنے آئے جس کے بعد صوبے میں کیسز کی مجموعی تعداد 119 ہوگئی ہے۔

گلگت بلتستان میں بدھ کے روز کورونا وائرس کے 4 کیس رپورٹ ہوئے جس کے بعد علاقے میں مجموعی تعداد 84 ہوگئی ہے۔ آزاد کشمیر میں کورونا وائرس کا اب تک ایک ہی کیس رپورٹ ہوا ہےجب کہ ریاست میں حکومت نے شہریوں سے احتیاط کرنے کی اپیل کی ہے۔

دوسری جانب ملک کے جید علمائے کرام نے فتویٰ دیا ہے کہ وبا سے احتیاطی تدابیر کو اپنانا نبیﷺ کی سنّت ہے اور  توبہ استغفار کے بغیر کورونا وائرس سے چھٹکارا ممکن نہیں۔