پاڑہ چنار میں ایک خاتون میں کروانہ وائرس کی تصدیق

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

چند دن پہلے ایران سے واپسی کے دوران جانبحق ہونے والی خاتون میں بھی کرونا وائرس کی تصدیق ہوگئی ہے جس سے صوبے میں مصدقہ کیسز کی تعداد 31 تک پہنچ چکی ہے جن میں 3 کی موت بھی واقع ہوگئی ہے۔ نئے کیس کے ساتھ پاکستان میں اس وبائی مرض کے متاثرین 645 تک پہنچ گئے ہیں۔

اجمل وزیر نے پشاور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ خیبر پختونخوا میں کورونا وائرس سے اموات کی تعداد تین ہوگئی ہے اور ایران سے آنے والی ایک خاتون کورونا وائرس کے باعث جاں بحق ہوگئی، صوبے میں اس وائرس کے مصدقہ کیسز 31 اور مشتبہ کیسز کی تعداد 179 ہے۔ مذکورہ خاتون کا تعلق کرم ضلع کے پاڑہ چنار علاقے سے تھا۔

اجمل وزیر نے بتایا کہ کورونا وائرس کا پھیلاؤ کیلئے آج صبح 9 بجے سے 24 مارچ تک لاک ڈاؤن کا فیصلہ کیا ہے جبکہ 7 روز کے لیے پبلک ٹرانسپورٹ پر پابندی لگائی ہے اور ریسٹورنٹ سمیت دکانیں بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے تاہم پٹرول پمپ، ادویات اور اشیائے خورونوش کی دکانیں کھلی رہیں گی اور مال بردار گاڑیوں کو بھی پابندی سے استثنی ہوگا۔

اجمل وزیر نے کہا کہ علمائے اکرام سے رابطے میں ہیں اور عوام سے حکومت کے ساتھ تعاون کرنے کی اپیل ہے، لوگ اجتماع میں جانے سے گریز کریں، سماجی رابطوں کو محدود کریں، عوام ساتھ دیں گے تو اس جنگ میں کامیاب ہو سکیں گے، طبی عملے میں اضافے کے لیے 13 سو ڈاکٹرز بھرتی کیے جارہے ہیں۔

واضح رہے کہ پاکستان میں ابھی تک کرونا وائرس سے مجموعی ہلاکتوں کی تعداد 4 ہوگئی ہے جن میں ایک کا تعلق صوبہ سندھ سے ہے۔