پنڈی پولیس کے مبینہ تشدد سے باجوڑ سے تعلق رکھنے والی خاتون جاں بحق

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

راولپنڈی میں پولیس کے مبینہ تشدد سے باجوڑ سے تعلق رکھنے والی خاتون جاں بحق ہوئی ہے جس کے خلاف لواحقین نے لاش کو تھانے کے سامنے رکھ کر احتجاج شروع کردیا ہے۔

محمد اسماعیل نامی شخص کے مطابق پولیس کی نفری ان کے گھر آئی اور کرایہ نامہ، شناختی کارڈ اور دیگر کاغذات طلب کی جو کہ تمام انہیں مہیا کی گئی۔

انہوں نے کہا کہ کاغذات کی حوالگی کے باوجود پولیس انہیں پکڑ کر لے جانے لگی تو اس دوران ان کی پولیس کے ساتھ تو تو میں میں ہونے لگی اور پولیس ان پر تشدد کرنے لگی۔ اس دوران ان کی ماں ان کو بچانے کے لئے آگے آئی تو ایک پولیس اہلکار نے انہیں دھکا دے کر گرا دیا جس سے وہ بے ہوش ہوگئی۔

اسماعیل کا کہنا ہے کہ جب اپنی ماں کو ہسپتال لے گیا تو ڈاکٹروں نے ان کی موت کی تصدیق کردی۔

واقعے کے بعد لواحقین نے لاش کو رتہ امرال تھانہ کے سامنے رکھ کر احتجاج شروع کردیا ہے اور الزام لگا رہی ہے کہ پولیس ان کا ایف آئی آر درج کرنے سے بھی انکار کر رہی ہیں۔

جبکہ سیکٹر کمانڈر نارتھ نے متاثرہ خاندان کے ہر قسم کے امداد کی ہدایات جاری کرتے ہوے ڈئ ائی جی ملاکنڈ کو راولپنڈی میں پولیس کے اپریشن کے دوران جانبحق ہونیوالے خواتین اور بچے پر تشدد کے حوالے سے تفصیلی بات چیت کی  اور عندیہ دیا کہ ملوث افراد کو قرار واقعی سزا دی جائے۔