کورونا وائرس: چمن بارڈر آج بند کردیا گیا

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

کورونا وائرس کی روک تھام کے لیے حفاظتی اقدامات کے تحت پاک افغان بارڈرآج بند کردیا گیا۔ سیکیورٹی حکام کے مطابق پاک افغان بارڈر باب دوستی 9 مارچ تک بند رہے گا اور  اس دوران کسی کو آمدورفت کی اجازت نہیں ہوگی، اس سلسلے میں تمام ٹریڈرز، گڈز ٹرانسپورٹرز کو مال بردار گاڑیاں، کسٹم ہاؤس اور دیگر یارڈ منتقل کرنے کی ہدایت کردی گئی ہے۔

حکام کا کہنا ہےکہ پاک افغان بارڈر پر دوطرفہ پیدل آمدورفت اور تجارتی سرگرمیاں بھی معطل رہیں گی۔ حکام کے مطابق پاک افغان بارڈرپراب تک کورونا کاکوئی مریض نہیں سامنے نہیں آیا لیکن سکریننگ ٹیمیں باب دوستی پر موجود رہیں گی۔

اس کے علاوہ پاک افغان سرحد سے ملحقہ قبائلی اضلاع میں کورونا وائرس سے شہریوں کو بچانے کے لیے مختلف اقدامات کیے گئے ہیں اور ڈی ایچ کیو ہسپتال پاراچنار میں آئسولیشن وارڈز قائم کردیے گئے ہیں۔

پاک افغان سرحد باب دوستی پر میڈیکل ٹیکنیشن ٹیم ریڈ کریسنٹ اور پی پی ایچ آئی کے تعاون سے لوگوں کی اسکریننگ کا عمل جاری ہے۔ ادھر طورخم بارڈر پر بھی میڈیکل چیک پوائنٹ قائم کردیا گیا ہے اور افغانستان سے آنے جانے والوں کی سکریننگ کا سلسلہ جاری ہے۔

پاک افغان دوستی ہسپتال طورخم میں آئسولیشن وارڈ قائم کیا گیا ہے جب کہ لنڈی کوتل اور جمرود ہسپتالوں میں بھی آئسولیشن وارڈ قائم کیے گئے ہیں، طورخم میں عملے کو ایمبولینس بھی فراہم کی گئی ہے۔

محکمہ صحت اور نیشنل ہیلتھ اسٹیبلشمنٹ کا عملہ تھرمل سکینرز کے ذریعے بخار کے مریضوں کا معائنہ کر رہا ہے۔ دوسری جانب ایران میں کورونا وائرس سے ہونے والی اموات کے بعد پاک ایران سرحد تفتان کی بندش کا آج دسواں روز ہے تاہم ایران سے پاکستانی شہریوں کی پاکستان واپسی کا عمل جاری ہے، گزشتہ روز 1321 شہری تفتان پہنچ گئے۔