عدالت باجوڑ نے پہلی مجرم کو سزا سنا دیا

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

قبائلی اضلاع کے انضمام کے بعد پہلی بار عدالت نے قتل کے مقدمہ میں ملزم کو دو بار سزائے موت کا حکم سنا دیا۔

ایڈیشنل سیشن جج اول ضلعی عدالت باجوڑ میاں زاہد اللہ جان نے بدھ کے دن قتل کے مقدمہ میں ملزم فرنٹیئر کور کے سابق اہلکار محمد شفیق ولد محمد صدیق سکنہ ہریپور کو قتل کا الزام ثابت ہونے پر دو بار سزائے موت کی سزا سنادی۔

ایڈیشنل سیشن جج نے ملزم کو دو بہنوں مسماة شازیہ بیگم اور مسماة شاہدہ پروین کو قتل کرنے پر دو بار سزائے موت کی سزا اور ساتھ ہی 10لاکھ روپے جرمانہ بھی کیا جو مجرم محمد شفیق مقتولین کے ورثاء کو ادا کرے گا۔

یاد رہے کہ 29 اگست 2018 کو ضلع باجوڑ کی تحصیل ماموند علاقہ عمرے میں واقع گورنمنٹ گرلز پرائمری سکول میں سابق ایف سی اہلکار محمد شفیق ولد محمد صدیق سکنہ ہری پور نے گھریلو ناچاقی پر فائرنگ کرکے سکول ٹیچر شازیہ بیگم اورشاہدہ پروین کو قتل کیا تھا۔

ملزم کو موقع واردات پر مقامی لوگوں نے گرفتار کرکے حکومت کے حوالہ کیا تھا۔ باجوڑ کے لوگوں نے مقامی عدالت کے اس فیصلہ کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس فیصلہ سے انصاف کے تقاضے پورے ہوگئے۔