چارسدہ میں احساس پروگرام بدنظمی اور بدانتظامی کا شکار

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

چارسدہ میں احساس پروگرام کے تحت مستحق شہریوں کی رجسٹریشن کا عمل جاری ہے تاہم بدنظمی اور بدانتظامی کی وجہ سے غریب شہری دھکے کھانے پر مجبور ہیں جو غریبوں کو ان کی غربت کا احساس دلانے کیلئے کافی ہے۔

وزیر اعظم احساس پروگرام کے تحت چارسدہ میں بھی شہریوں کی بڑی تعداد صبح سے لے کر شام تک اپنا نام رجسٹرڈ کرنے کے لئے دھکے کھانے پر مجبور ہیں، اندراج کے لئے آنے والے شہریوں نے احساس پروگرام کی رجسٹریشن کے نامناسب طریقہ کار پر بے تحاشہ سولات اٹھا لئے۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ صبح سویرے اپنے سارے کام چھوڑ کر یہاں آتے ہیں لیکن سارا دن انتظار کرنے کے بعد بھی کوئی صلہ نہیں مل رہا۔

شہریوں کے لئے شروع ہونے والے اس پروگرام میں بدنطمی اور بدانتظامی کے ساتھ ساتھ بے صبری کا یہ عالم ہے کہ شہریوں کی دھکم پیل کی وجہ سے دفتر کے شیشے ٹوٹنا بھی معمول بن چکا ہے، شہریوں کے نامناسب رویے سے ڈیوٹی پر معمور اہلکار بھی شدید کوفت کا شکار ہو چکے ہیں۔

اندراج کے لئے آنے والے مرد و خواتین کی دھکم پیل، پہل کرنے کی کوشش اور نامناسب سیکیورٹی کے باعث شہریوں کے مابین سارا دن رسہ کشی کا سلسلہ جاری رہتا ہے۔

اس حوالے سے شہریوں کا کہنا تھا کہ وزیراعظم پاکستان کے احساس پروگرام میں بدنظمی اور غریبوں کی مشکلات کی بنیادی وجہ شہریوں کی بڑی تعداد اور عملے کی کمی ہے، اگر مرد و خواتین کیلئے علحیدہ کاؤنٹر کا قیام اور اندراج کو یونین کوسل کی سطح پر مرحلہ وار کیا جائے تو رجسٹریشن کا عمل خوش اسلوبی سے پایہ تکمیل تک پہنچ سکتا ہے۔