شمالی وزیرستان میں تین پولیس تھانے فعال

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

خیبر پختونخوا میں انضمام کے بعد پہلی بار قبائلی ضلع شمالی وزیرستان میں پولیس کے 3 تھانے بنا کر فعال کر دیئے گئے ہیں۔

ضلعی پولیس افسر شمالی وزیرستان شفیع اللہ گنڈاپورنے ٹی این این کے ساتھ خصوصی بات چیت کے دوران کہا ہے کہ شمالی وزیرستان کے 3246 خاصہ داراور 673 لیویز سپاہی ریاست کی پالیسی کے تحت خیبر پختونخوا پولیس میں ضم ھوگئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پولیس تهانہ صدر مقام میرانشاہ ، پولیس تهانہ سب ڈویژن میرعلی اورپولیس تهانہ سب ڈویژن رزمک میں بنا کر فعال کر دیئے گئے ہیں اور ان تھانوں میں ڈی ایس پی، ایس ایچ او اور دیگر سٹاف کو تعینات کردیا گیا ہے۔

شمالی وزیرستان کے ڈی پی او کا کہنا ہے کہ عوام پولیس پرمکمل اعتماد کریں اور علاقے میں امن وامان برقرار رکھنے کے لئے پولیس کے ساتھ تعاون کریں، عوامی مسئلے مسائل اور تنازعات کو  فریقین کی رضامندی سے ڈی، آر، سی اور جرگہ مشران کے ذریعے سے حل کریں گے۔

انہوں کہا کہ ہمارے لئے سب سے بڑا چیلنج پی کے 111 اور پی کے 112 پرہونے والے انتخابات ہیں تاہم ہم تمام پولنگ سٹیشنوں کو فل پروف سکیورٹی فراہم کریں گے اور انتخابات کو شفاف بنائیں گے۔

دوسری جانب چیف آف وزیرستان ملک نصر اللہ خان نے کہا ہے کہ شمالی وزیرستان میں پولیس کا نظام فعال ہے اور عوام کا پولیس پرمکمل اعتماد ہے، انہوں نے کہا کہ پولیس نظام کمزور نہیں لیکن اس کو مکمل طور پر فعال کرنے میں توڑا وقت لگے گا۔