قبائلی اضلاع میں 24 ارب 70 کروڑ کے 18 منصوبوں کا خاکہ تیار

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

خیبرپختونخوا کے محکمہ کھیل اور سیاحت و ثقافت نے قبائلی اضلاع میں ترقیاتی منصوبوں کا ابتدائی خاکہ مرتب کرلیا ہے جس کے تحت آئندہ 3 برسوں میں محکمہ 24 ارب 70 کروڑ روپے کی لاگت سے قبائلی اضلاع میں 18 منصوبے مکمل کرے گا۔

روزنامہ مشرق میں شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق ان منصوبوں میں سب سے زیادہ محکمہ کھیل کے 6، سیاحت کے 5، امور نوجوانان کے 4، ثقافت کے 2 اور آثار قدیمہ کا ایک منصوبہ شامل ہے۔

قبائلی اضلاع کے لئے 10 سالہ پروگرام کےتحت محکمہ کھیل ساڑھے 3 ارب روپے سے 7 سپورٹس کمپلیکسز تعمیر کئے جائیں گے، 60 کروڑ روپے کی لاگت سےسابق 6 فرنٹیئر ریجنز (ایف آرز) میں ایک ایک سپورٹس کمپلیکس، 7 قبائلی اضلاع اور 6 فرنٹیئر ریجنز میں خواتین کےلئے ایک، ایک انڈور جمنیزیم ہال ایک ارب 30 کروڑ روپے کی لاگت سے تیار کیاجائے گا۔

خیبرپختونخوا حکومت45 کروڑ روپے کی لاگت سے 3 سالوں کے دوران کھیلوں کی سرگرمیوں کا انعقاد بھی کرے گی جبکہ قبائلی علاقوں میں کھیلوں کے موجودہ میدانوں کی بحالی اور آبادکاری پر 2 ارب روپے خرچ ہوں گے اسی طرح محکمہ کھیل کےدفاتر کےلئے 20 کروڑ روپے رکھنے کی تجویز ہے۔

قبائلی اضلاع میں نئے سیاحتی مقامات کی ترقی کےلئے 5 ارب، دریاؤں کے کناروں اور مختلف ڈیموں پر سیاحتی سرگرمیوں کےلئے ایک ارب، سیاحتی تہواروں کےلے 6 کروڑ روپے، پشاور اور طورخم ریلوے ٹریک کی بحالی کےلئے ڈھائی ارب روپے اور چھوٹے تفریحی مقامات کی تیاری کےلئے 75 کروڑ روپے رکھنے کی سفارش کی گئی ہے۔

قبائلی اضلاع کے نوجوانوں کی ترقی کےلئے 2 ارب روپے، انصاف روزگار سکیم کےلئے بھی 2 ارب روپے، ڈائریکٹوریٹ کے دفاترکے قیام کےلئے 10 کروڑ روپے جبکہ سب ڈویژنز میں جوان سنٹر کے قیام کےلئے ایک ارب روپے رکھنے کی تجویز ہے۔

7 قبائلی اضلاع میں آرٹ اور کلچر سنٹرز کے قیام کےلئے 70 کروڑ جبکہ ثقافتی شوز اور تہواروں کےلےئ 30 کروڑ روپے رکھنے کی تجویزہے اس کے علاوہ قبائلی اضلاع میں تاریخی مقامات کو دستاویزی شکل دینے اور ان کے تحفظ کےلئے 7 کروڑ روپے رکھے جائیں ۔

3 سالوں کے دوران ان  18 منصوبوں پر 24 ارب 70کروڑ، آئندہ برس 10ارب 27 کروڑ جبکہ تیسرے برس 7 ارب 41 کروڑ روپے خرچ کئے جائیں گے۔

ذرائع کے مطابق منصوبوں پر حتمی مشاورت کے لئے محکمہ کا اجلاس پیر کے روزطلب کیاگیاہے۔