عوض نور زیادتی و قتل کیس، مرکزی ملزم کا عدالت میں اعتراف جرم

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

نوشہرہ کے علاقہ زیارت کاکاصاحب واقعہ کے الزام میں گرفتار ملزم نے مقامی عدالت کے روبرو اپنے جرم کا اعتراف کرلیا۔

نوشہرہ کے علاقہ زیارت کاکا صاحب میں معصوم 8 سالہ عوض نور نامی بچی کو زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کرنے والے ملزم ابدار ولد عبد اللہ شاہ سکنہ پیر سچ زیارت کاکاصاحب کو مقامی عدالت میں پیش کیا گیا تو اس نے عدالت کے روبرو اپنے جرم کا اعتراف کر دیا اور کہا کہ بچی کو زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کیا گیا تھا جس پر عدالت نے اسے جیل بھیج دیا۔

دوسری جانب معصوم بچی کی دلخراش موت پر پورا علاقہ سوگوار ہے اور نور کے قاتلوں کو عبرتناک سزا دینے کا مطالبہ کررہے ہیں۔

دوسری جانب وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے زیارت کاکا صاحب نوشہرہ میں درندہ صفت افراد کے ہاتھوں8 سالہ معصوم بچی کے قتل پر متاثرہ خاندان سے ان کے گھر میں تعزیت کی جبکہ متاثرہ خاندان کو 10 لاکھ روپے کیش بطور مالی معاونت بھی موقع پر فراہم کی۔

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ صوبے میں ان جیسے واقعات قابل افسوس ہیں جبکہ صوبائی حکومت صوبے میں اس طرح کے واقعات کی روک تھام کیلئے صوبائی سطح پر سخت ترین قانون سازی کر رہی ہے، قانون سازی کا عمل ایک ماہ میں یقینی بنایا جائے گا۔

وزیراعلیٰ نے ضلعی پولیس و انتظامیہ کو سختی سے ہدایت کی کہ اس افسوسناک واقعے میں ملوث تمام ملزمان کو قرار واقعی اور عبرتناک سزا دی جائے اور اس کیس کو تیزی سے نمٹایا جائے، صوبائی حکومت اس کیس کی خود نگرانی کرے گی۔

وزیراعلیٰ نے کہاکہ جن ملزمان نے یہ فعل کیا ہے وہ انسان نہیں درندے ہیں، ملزمان نے انسانیت کی تذلیل کی ہے جبکہ ملزموں کو قانون کے تحت قرار واقعی سزا دی جائے گی اور ان کو کیفرکردار تک پہنچانے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی جائے گی۔

وزیراعلیٰ کا کہنا تھا کہ معصوم بچی کا قتل انتہائی ظلم ہے، اس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے ۔