وانا سکاؤٹس کیمپ کے سامنے سخت احتجاجی مظاہرہ

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

وانا، احمدزائی وزیر قبائل کے سرکردہ قومی مشران کے ہمراہ وانا سکاؤٹس کیمپ کے سامنے سخت احتجاجی مظاہرہ،9/11کے بعد آج تک مختلف اپریشنوں سے متاثرہ افراد کو حکومت کی جانب سے نہ معاوضے ملے ہیں اور نہ مالی تعاون کیا ہے.

وزیر اعلیٰ کے پی کے، کورکمانڈرپشاور، گورنر کے پی کے اور آئی جی ایف سی ساؤتھ نوٹس لیکر مختلف اپریشن سے متاثرہ افراد کے لواحقین کو معاوضے دینے کا اعلان کیا جائے اور وزیر قوم کو ٹی ڈی پیز(TDPs) تصور کیا جائے۔

وزیرستان کے بعض حصوں میں اپریشن سے متاثرہ افراد کے لواحقین کو معاوضے دئیے جارہے ہیں اور سروے شروع کئے گئے ہیں لیکن ہمیں اس پر کوئی اعتراض نہیں لیکن ان کے ساتھ ہمیں بھی دیا جائے۔

مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے ملک نظام الدین وزیر، ملک عبدالخالق وزیر،ملک محمد خان وزیر،ملک بہادر خان وزیر اور سماجی کارکن نورمحمد وزیر ودیگر نے کہا کہ سب سے پہلے کئی بار مختلف بڑے و چھوٹے اپریشز احمدزائی وزیر قبائل کے ضلعی ہیڈکواٹر وانا میں شروع ہوگئے جس سے سب سے زیادہ جانی ومالی نقصانات احمدزائی وزیر قبائل کے ہوے ہیں.

انہوں نے مزید کہا کہ شہداء اور زخمیوں کے علاوہ اپریشن سے گھر مسمار ہوگئے، لوگوں کی گاڑیاں بھی تباہ ہوگئیں، گولہ باری سے ہزاروں ٹیوب ویلز تباہ ہو نے سمیت مارکیٹس بھی تباہ ہوگئیں ، سیب و دیگر میوہ دار درختوں کے بڑے بڑے باغات بھی متاثر ہوگئے ہیں لیکن اس باوجود ازالہ نہیں ہوا.

مظاہرین کا کہنا تھا کہ ہم نے اس وقت غیر ملکی دہشت گرد تنظیمیں ازبک، تاجک اور چیچن کے خلاف لشکر کشی کرکے ملک کی بقاء کیلئے سخت جنگیں لڑیں جس سے ہمیں بھاری نقصانات اٹھانا پڑا ۔

مظاہرین نے مزید کہا کہ ہم نے ملک کی خاطر اس وقت اپنے گھر بار چھوڑدیا تھا لیکن حکومت وقت اور ضلعی انتظامیہ نے ہمارے ساتھ وہ تعاون نہیں کیا جو ہوناچاہئے تھا۔

انہوں نے کہا حکومت ہماری قربانیوں کو دیکھ کر معاوضے دینے کا اعلان کرہے بصورت دیگر احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ وسیع کیا جائیگا۔