باڑہ میں ناقص سی این جی ٹینکرز کے استعمال پر پابندی عائد، پشاور میں کریک ڈاؤن

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

چارسدہ روڈ پر گیس فِلنگ کے دوران دھماکے کے بعد پشاور اور باڑہ کی ضلعی انتظامیہ نے فٹنس سرٹیفیکیٹ کے بغیر چلنے والی گاڑیوں کیخلاف کریک ڈاؤن کا آغاز کر دیا۔

پشاور کی ضلعی انتظامیہ نے ریجنل ٹرانسپورٹ اتھارٹی کے افسران اور ٹریفک پولیس کے ہمراہ مشترکہ آپریشن کرتے ہوئے شہر کے مختلف علاقوں میں بغیر فٹنس سرٹیفیکیٹ کے سی این جی سلینڈر استعمال کر نے پر بیشتر گاڑیوں کو جرمانہ اور رجسٹریشن کاغذات کو سرکاری تحویل میں لے لیا۔

چارسدہ روڈ پر سی این جی فلنگ سٹیشن میں دھماکہ کے بعد ڈپٹی کمشنر پشاور محمد علی اصغر کی ہدایت پر پشاور بھر میں بغیر فٹنس سرٹیفیکیٹ اور ناقص سی این جی کٹ استعمال کرنے والی گاڑیوں کے خلاف کریک ڈاؤن جاری ہے۔

اس سلسلے میں اسسٹنٹ کمشنر (متنی) رضوانہ ڈار نے ریجنل ٹرانسپورٹ اتھارٹی کے افسران کے ہمراہ کسٹم چوک میں مختلف گاڑیوں میں فٹنس سرٹیفیکیٹ اور سی این جی سلینڈروں کا معائنہ کیا، فٹنس سرٹیفیکیٹ نہ ہونے پر پچاس سے زائد گاڑیوں کے رجسٹریشن کاغذات سرکاری تحویل میں لے لیے۔

ان گاڑی مالکان کو ہدایت کی گئی کہ جلد از جلد متعلقہ سی این جی ورکشاپ سے سی این جی کٹ اور سلینڈر کا معائنہ کرکے فٹنس سرٹیفیکیٹ حاصل کریں۔

اسسٹنٹ کمشنر(شاہ عالم) ڈاکٹر احتشام الحق نے چارسدہ روڈ پر ٹریفک پولیس کے ہمراہ مختلف گاڑیوں میں فٹنس سرٹیفیکیٹ اور سی این جی سلینڈروں کا معائنہ کیا اور بغیر فٹنس سرٹیفیکیٹ کے گاڑیوں میں سی این جی سلینڈر استعمال کرنے اور ناقص سلینڈر کے استعمال پر درجنوں گاڑیوں کے مالکان کو موقع پر جرمانہ کیا گیا اور ان کو ہدایت کی گئی کہ جلد از جلد متعلقہ سی این جی ورکشاپ سے سی این جی کٹ اور سلینڈرکا معائنہ کر کے فٹنس سرٹیفیکیٹ حاصل کریں بصورت دیگر سخت قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

دوسری جانب ضلعی انتظامیہ باڑہ نے گاڑیوں میں ناقص سی این جی ٹینکرز کے استعمال پر پابندی عائد کرتے ہوئے متعدد ٹیکسی گاڑیوں سے سی این جی سلینڈرز اتارنا شروع کر دیے۔

پیر کے روز ڈپٹی کمشنر ضلع خیبر محمود اسلم کی ہدایات کی روشنی میں اسسٹنٹ کمشنر باڑہ نیک محمد بنگش نے باڑہ بازار کے مختلف اڈوں سے چلنے والی ٹیکسی کارز، فلائنگ کوچز، آلٹو کارز اور سواریاں لانے لے جانے والی مقامی پک اپ ڈاٹسن گاڑیوں میں زیر استعمال ناقص سی این جی سلینڈرز کے خلاف کریک ڈاؤن شروع کیا ہے۔

اسسٹنٹ کمشنر باڑہ نے ٹریفک پولیس کو احکامات جاری کرکے ناقص سلینڈر کے ممکنہ خطرات سے بچنے کے سلسلے میں کئی گاڑیوں سے سی این جی ٹینکیاں اتار کر انہیں ضلعی انتظامیہ کی جانب سے جاری کردہ احکامات پر عمل کرنے کی سختی سے نوٹس جاری کیا۔

اسسٹنٹ کمشنر باڑہ نیک محمد بنگش نے کریک ڈاؤن کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ باڑہ میں مقامی سطح پر سواریاں لیجانے والے گاڑیوں کے ڈرائیوروں اور ٹرانسپورٹ اڈوں کے مالکان کو باقاعدہ طور پر آگاہ کیا ہے کہ علاقائی لوگوں کو سی این جی گاڑیوں میں استعمال ہونے والے ناقص سلینڈز کی وجہ سے شدید خطرات لاحق ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کریک ڈاؤن کے دوران فرنٹیئر روڈ پر 76 گاڑیوں کا معائنہ کیا گیا جن میں دو گاڑیوں سے سی این جی سلینڈر اتار کر ٹریفک انچارج کے حوالے کیا گیا جبکہ اس کے علاوہ 5 فلائنگ کوچ ڈرائیوروں کو متنبہ کیا گیا اور 6 گاڑیوں کو ٹریفک رولز کے مطابق ای چالان کے ذریعے جرمانہ کیا گیا۔

انہوں نے باڑہ کے تمام ٹرانسپورٹروں کو چوبیس گھنٹے کی ڈیڈ لائن دیتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ سی این جی گاڑیوں میں استعمال ہونے والی سلینڈرز ٹینکی کی کلیئرنس سرٹیفیکٹس متعلقہ سی این جی پمپوں سے حاصل کرکے پیش کریں ورنہ عمل نہ کرنے کی صورت میں سخت ایکشن لیا جائے گا۔

یاد رہے کہ 10 جنوری کو پشاور میں چارسدہ روڈ پر گاڑی میں گیس سلنڈر کا دھماکہ ہوا جس کے نتیجے میں خاتون جاں بحق اور 3 بچے زخمی ہوگئے تھے۔