درہ آدم خیل کی اسلحہ سازی صنعت کو قانونی تحفظ دینے کا فیصلہ

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

سیکرٹری محکمہ داخلہ و قبائلی اُمور خیبر پختونخوا اکرام اللہ خان کی زیرِ صدارت پشاور میں درہ آدم خیل کی اسلحہ سازی کی صنعت کو قانونی تحفظ دینے کیلئے کوآرڈنیشن کمیٹی کا اجلاس منعقد ہوا جس میں بریگیڈئیر 117 بریگیڈ، کمشنر اور ڈی سی کوہاٹ اور ایم ڈی ایس آئی ڈی بی (سمال انڈسٹریل ڈویلپمنٹ بورڈ) نے شرکت کی۔

اس موقع پر سیکرٹری داخلہ نے کہا کہ درہ آدم خیل کی تاریخی اسلحہ سازی کی صنعت کو قانونی تحفظ دیکر اس کو ترقی دینا صوبائی حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہے۔

اجلاس کے دوران سیکرٹری داخلہ نے ہدایات جاری کیں کہ منصوبے کے پی سی ون (PC-1) کو جلد از جلد منظوری کے لئے پیش کیا جائے اور ساتھ ساتھ منصوبے کیلئے زمین کی خریداری کو بھی مکمل کیا جائے۔

سیکرٹری داخلہ نے اجلاس کے شُرکاء کو بتایا کہ درہ آدم خیل کے تقریباً دس ہزار سے زائد کاروباری افراد اسلحہ سازی کی صنعت سے وابستہ ہیں جس سے نہ صرف صنعت بلکہ مقامی لوگوں کو روزگار کے موقع بھی فراھم ہوں گے، اس منصوبے کی اہمیت کو مدنظر رکھ کر اس کو ترقی دینے اور قانونی تحفظ فراہم کرنے کیلئے موجودہ حکومت سنجیدگی سے اقدامات اٹھا رہی ہے۔

سیکریٹری کا مزید کہنا تھا کہ منصوبے کے تحت درہ آدم خیل میں ایک سمال انڈسٹریل سٹیٹ (Small Industrial Estate) قائم کی جائے گی جسے حکومت کے Accelerated Implementation Program کا حصہ بنایا جائے گا۔