جنوبی وزرستان کے متاثرینِ کا اپنے حقوق کے لیے احتجاجی مظاہرہ

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

متاثرینِ وانا نے اپنے حقوق کے حوالے سے بھر پور احتجاجی مظاہر کیاجس میں وانا سی اتحاد اور قبائلی عمائدین سمیت کثیر تعداد میں لوگوں نے شرکت کی۔ احتجاجی ریلی وانا بازار سے ہوتی ہوئی وانا پریس کلب کے سامنے اختتام پذیر ہوگئ

ریلی کے شرکاء سے سابق قومی اسمبلی کے امیدوار عبدلخالق وزیر، وانا سیاسی اتحاد کے صدر ایاز وزیر،ملک سرفراز،ملک بہادر اشرف خیل نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ دہشت گردی کی جنگ میں سب سے زیادہ احمدزئی وزیرقبائل متاثر ہوگئےہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ دہشت گردی کی جنگ سے احمدزئی وزیر قبائل کے سینکڑوں مرد،خواتین،بچے اور بوڑھے معزور ہوگئے ہیں اور بہت سے افراد شہید ہوگئے ہیں لوگوں کے گھر اور سبزی ومیوجات کے باغ تباہ ہوگئے لیکن پھر بھی وزیرقبائل کو نہ ہونے کے برابر معاوضہ دیاگیا۔

ملک عبدالخالق وزیر نے کہا کہ ملک کے دیگر علاقوں یعنی پنجاب،سندھ اور خیبر پختون خواہ میں حکومت کسی قسم کے ناخوشگوار واقع میں شہید ہونے والے افراد کو 15لاکھ سے لیکر 25 لاکھ، معمولی زخمی کو 5سے لیکر10 لاکھ تک معاوضہ دیتی ہے۔

انھوں نے کہاکہ دہشتگردی کی جنگ میں احمدزئی وزیرقبائل نے حکومت کے ساتھ شانہ بشانہ لڑنے کا اعلان کیاتھا۔ازبک،تاجک،ترکمن اور دیگردہشت گردوں کو شکست دینے میں احمدزئی وزیر قبائل نے کسی قسم کے قربانی سے دریغ نہیں کیا پھربھی حکومت پاکستان وزیر قوم کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک کررہی ہے جو کہ افسوسناک ہے۔

سیاسی اتحاد کے صدر ایاز وزیر نے کہاکہ اگر حکومت پاکستان نے متاثرین وانا کو ملک کے دیگر حصوں کی طرح معاوضہ نہیں دیا تو ہمارا احتجاج جاری رہیگا۔

ملک نظامالدین نے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیاکہ متاثرین وانا کو فورطورپر ملک کے دوسرے شہروں کی طرح معاوضے کا اعلان کیاجائے۔انھوں کہاکہ دہشت گردی کی جنگ میں احمدزئی وزیر قبائل کے بازاروں،گھروں سمیت مختلف قیمتی املاک کو بھی نقصانات ہہنچا ہے ان کی فوری طور سروے شروع کرکے نقصانات کا ازالہ کیاجائے تاکہ یہاں کے متاثرین کو بھی دیگر علاقوں کی طرح معاضہ مل سکے