ضم اضلاع کے نوجوانوں کیلئے 3 ارب مالیت کی روزگار سکیم کا اعلان

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

خیبر پختونخوا کے سینئر وزیر برائے سیاحت و یوتھ افئیرز عاطف خان نے کہا ہے کہ ضم شدہ اضلاع کی ترقی وزیراعظم عمران خان کی اولین ترجیحات میں شامل ہے، ضم شدہ اضلاع کی ترقی کے لئے ساڑھے 9 ارب روپے سیاحت اور ساڑھے 8 ارب روپے کھیلوں کی ترقیاتی سکیموں کی منظوری دی جا چکی ہے۔

پشاور کے ایک مقامی ہوٹل میں ضم شدہ اضلاع کے نوجوانوں کی اقتصادی بحالی کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عاطف خان نے کہا کہ ضم شدہ اضلاع کے نوجوانوں کو اپنا کاروبار شروع کرنے کے لئے 3 ارب روپے کا پروگرام جلد شروع کیا جائے گا۔

سینئر صوبائی وزیر نے کہا کہ قبائلی اضلاع میں کلچر سنٹرز بنانے کے لئے 2 ارب روپے مختص کئے گئے ہیں، صوبے میں 14 نئے سیاحتی مقامات دریافت کئے گئے ہیں جیسے ترقی دینے کے لئے 5 ارب روپے کی منظوری دی جا چکی ہے۔

عاطف خان کے مطابق بین القوامی سطح پر ملکی سیاحت کی پذیرائی شروع ہوئی ہے، سیاحت کے فروغ کے لئے 4 مربوط سیاحتی زونز قائم کئے جارہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ چترال اور ہزارہ میں مقامی لوگوں کو سیاحت کے حوالے سے تربیت دینے کے لئے 50 کروڑ روپے کی منظوری دی جا چکی ہے، مقامی سطح پر عوام کو اپنے گھروں کو سیاحوں کا مسکن بنانے کے لئے 10 لاکھ تک گرانٹ اور قرضے فراہم کئے جائیں گے۔

خیال رہے کہ گزشتہ روز شہید بے نظیر بھٹو ویمن یونیورسٹی میں کامیاب جوان پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے سینئر وزیر نے کہا تھا کہ نوجوانوں کو معاشی طور پر مضبوط بنانے کے لئے عملی اقدامات اٹھا رہے ہیں، اس ضمن میں وفاقی سطح پر کامیاب جوان پروگرام کے نام سے 100 ارب روپے کا پروگرام شروع کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ خیبر پختونخوا حکومت صوبائی سطح پر بھی نوجوانوں کو باروزگار بنانے کے لئے 5 ارب روپے آسان شرائط پر قرضے کا پروگرام شروع کر رہی ہے جس میں 3 ارب روپے ضم شدہ اضلاع جبکہ دو ارب روپے صوبے کے باقی اضلاع کے نوجوانوں کو فراہم کئے جائیں گے، صوبے میں 14 نئے سیاحتی مقامات تک سڑکوں کی تعمیر کے لئے 5 ارب روپے کی منظوری دی جا چکی ہے۔

سینئر وزیر کا کہنا تھا کہ پاکستان میں 60 فیصد سے زائد نوجوان ہیں، اور یہ نوجوان پاکستان کی طاقت ہیں، کامیاب جوان پروگرام کا مقصد نوجوانوں کو باروزگار بنانا ہے، پروگرام کے ذریعے نوجوانوں کو نہ صرف سرمایہ فراہم کیا جائے گا بلکہ کاروباری تربیت بھی دی جائے گی، خیبر پختون خوا حکومت نے پچھلے دور حکومت میں نوجوانوں کو باروزگار بنانے کے لئے 50 کروڑ روپے کی گرانٹ فراہم کی ہے، گرانٹ حاصل کرنے والے نوجوان اب نہ صرف خود باروزگار ہیں بلکہ انہوں نے دوسرے نوجوانوں کو بھی باروزگار بنایا ہے۔