ضلع خیبر کے دو لاکھ 13 ہزار 285 بچوں کو پولیو قطرے پلانے کی مہم جاری

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

ایمرجنسی آپریشن سینٹر خیبرپختونخوا (ای او سی) کے کوآرڈینیٹر عبدالباسط نے آج ضلع خیبر کا دورہ کیا اور محتلف علاقوں میں جاری انسداد پولیو مہم کی نگرانی اور پولیو ٹیموں کی حوصلہ افزائی کی۔

تحصیل جمرود میں مرکز صحت علی مسجد اور تحصیل باڑہ میں سول ڈسپنسری لال چینہ کا دورہ کرتے ہوئے عبدالباسط نے بگیاڑی چیک پوسٹ پر جاری ویکسینیشن کے انتظامات دیکھے اور تحصیل لنڈی کوتل میں ہسپتال کے عملے سے بھی ملے، وہ طورخم باڈر بھی گئے اور ٹرانزٹ ٹیموں سے بھی ملاقات کی۔

ای او سی کے کوآرڈینیٹر نے مشکل حالات کے باوجود بچوں کو پولیو قطرے پلانے پر ٹیموں کی حوصلہ افزائی کی۔

اس موقع پر ای او سی کوآرڈینیٹر عبدالباسط نے کہا کہ دسمبر کی انسداد پولیو مہم انتہائی اہمیت کی حامل ہے، صوبہ بھر کے بچون کو پولیو قطرے پلائیں جائیں گے، پشاور سے متصل ضلع خیبر میں پانچ سال سے کم عمر بچوں اور افغانستان آنے جانے والے مسافروں کو پولیو قطرے پلانا بہت ضروری ہے۔

انہوں نے کہا انسداد پولیو ویکسین کے دو قطرے نہ صرف بچوں کی قوت مدافعت بڑھا کر انہیں ساری عمر کی معذوری سے محفوظ رکھتے ہیں بلکہ وائرس کی گردش کو روکنے میں بھی مددگار ثابت ہوتے ہیں۔

اس موقع پر عبدالباسط نے پولیو ٹیموں پر زور دیا کہ دیے گئے اہداف سو فیصد پورا کرنے کی کوشش کریں اور والدین سے اٌپیل کی کہ پولیو ٹیموں کے ساتھ تعاون کریں۔

ای او سی کے مطابق ضلع خیبر میں جاری انسداد پولیو مہم کے دوران 213285 بچوں کو 1242 ٹیموں کی مدد سے پولیو قطرے پلائے جائیں گے۔

اس سال 2019 میں اب تک صوبہ خیبرپختونخواہ سے 75 پولیو کیسز سامنے آ چکے ہیں جبکہ پورے ملک میں پولیو کیسز کی تعداد 104 تک پہنچ چکی ہے۔

خیال رہے کہ آج بھی ملک میں پولیو کے تین کیسز سامنے آئے جن میں سے دو کا تعلق خیبرپختونخوا سے ہے۔ 4 سے 8 ماہ کے 3 بچوں میں پولیو وائرس کی تصدیق کے بعد رواں برس پاکستان میں پولیو کے کیسز کی مجموعی تعداد 104 تک پہنچ گئی ہے۔