ضم شدہ اضلاع میں ایڈز سے متاثرہ رجسٹرڈ افراد کی تعداد 738 ہیں

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

ڈائریکٹوریٹ ہیلتھ سروسز ضم شدہ اضلاع اور ایڈز کنٹرول پروگرام ضم شدہ اضلاع کے زیر اہتمام ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال خا رضلع باجوڑمیں ایڈز سے آگاہی کیلئے سیمینار کا انعقاد کیاگیا ۔سیمینار میں مقامی افراد، ہیلتھ سٹاف اور ڈاکٹرز نے شر کت کی ۔

سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر باجوڑ ڈاکٹر خلیل الرحمن اور دیگر مقررین نے خطاب کرتے ہوئے ایڈز سے بچائو اوراحتیاطی تدابیر اپنے پرروشنی ڈالی ۔ مقررین نے کہا کہ ایچ آئی وی وائرس پھیلنے کے چند وجوہات جن میں غیر محفوظ جنسی تعلقات، استعمال شدہ سرنج کے استعمال ، غیر ٹیسٹ شدہ خون کے انتقا ل، استعما ل شدہ اورخون آلودہ اوزاروں کے استعمال اور متاثرہ ماں سے بچے کوپھیلتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ احتیاط ایڈز کے خلاف بہترین حفاظت ہے ۔

ایڈز کنٹرول پروگرام ضم شدہ اضلاع کے مطابق ضم شدہ اضلاع میں ایڈز مریضوں کی تعداد738 ہیںجن میں سب ذیادہ تعداد شمالی وزیر ستان کی ہے شمالی وزیر ستان میں ایڈز مریضوں کی تعداد190، ضلع کرم میں 148،ضلع خیبر 130، جنوبی وزیرستان 113، ضلع مہمند 62، ضلع باجوڑ 61جبکہ ضلع اورکزئی میں ایڈز مریضوں کی تعداد34ہیں ۔

فوکل پرسن نادر خان کے مطابق ضم شدہ میں ایڈز کے تشخیص اور علاج کیلئے تین مراکز جنوبی وزیر ستا ن ، ضلع کرم اور ضلع باجوڑ میں قائم کی گئی ہیں جہاں پر ان مریضوں کا علاج جاری ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جن اضلاع میں مراکز قائم کئے گئے ہیں اُن اضلاع کے لوگ علاج کیلئے پشاور آتے تھے لیکن اب متعلقہ ضلع میں ہی اُن کا علاج ہورہاہے ۔