ضلع کرم : عسکریت پسندی کے خلاف عوام کا امن مارچ

ضلع کرم میں عسکریت پسندی کے خلاف عوام کا امن مارچ ، حکومت سے عوام کی جان و مال کی حفاظت اور عسکریت پسندی کو روکنے کیلئے اقدامات کا مطالبہ ، عوام نے امن کیلئے سفید جھنڈے لہرا دیئے.

ضلع کرم کے علاقہ وسطی کرم میں عمائدین نے سفید جھنڈے اٹھا کر امن مارچ کیا اور دہشت گردی کی لہر دوبارہ آنے کی اطلاعات پر تشویش کا اظہار کیا عمائدین نے بچوں کے ہمراہ مختلف شاہراہوں پر امن واک کیا اور امن کی حمایت میں نعرے لگائے

واک کے شرکاء نے پلے کارڈز اور بینرز اٹھا رکھے تھے جن پر امن کے حوالے سے نعرے درج تھے اس موقع پر اپنے خطاب میں ملک پٹھان ، عمر چمکنی ، ملک حیات ، مولانا محمد الی اللہ جان ، مولانا عبدالغفور اور دیگر رہنما شریک تھے.

انہوں نے کہا کہ اس سے قبل بھی ضلع کرم میں عسکریت پسندی کے نتیجے میں ہزاروں لوگ بے گھر اور ہزاروں شہید اور زخمی ہوگئے لاکھوں لوگ اپنے علاقوں میں محصور ہوکر رہ گئے .

ان کا کہنا تھا کہ اب ایک بار پھر عسکریت پسندی کے آثار نظر آرہے ہیں اور مختلف علاقوں میں مسلح لوگوں کی موجودگی کے بھی اطلاعات ہیں جو کہ انتہائی تکلیف دہ اور تشویش ناک ہے.

رہنماؤں نے کہا کہ ضلع کرم میں ہماری نسلیں بدامنی میں جوان ہوگئے جو کہ حکومت اور ذمہ دار اداروں کے لیے لمحہ فکریہ ہے اور عوام کی جان و مال کی حفاظت حکومت کی ذمہ داری ہے.

عمائدین نے اعلان کیا کہ بدامنی کے واقعات شروع ہوئے تو وہ ضلع کرم اور ملک کے دیگر علاقوں میں احتجاجی تحریک شروع کریں گے اور احتجاجی دھرنے دیں گے عمائدین نے کہا کہ ان کا جرم کیا ہے کہ ضلع کرم میں بار بار بدامنی کے واقعات پیش آرہے ہیں اور ملی ٹینسی سر اٹھا رہی ہے.

خطاب میں ملک نور محمد اور ملک پٹھان نے کہا کہ ضلع کرم کے مقامی قبائل پر امن ہیں وہ امن چاہتے ہیں فورسز دوسرے علاقوں سے ضلع کرم داخل ہونے والے دہشت گردوں کا راستہ روکنے کیلئے اقدامات اٹھائیں کیونکہ عوام مزید لاشیں اٹھانے اور لڑائی جھگڑوں کے متحمل نہیں ہو سکتے .

عمائدین کا کہنا تھا کہ وقت آگیا ہے کہ عوام امن کیلئے یک آواز ہوکر متحد ہو جائیں اور عسکریت پسندی کے نئے لہر کا راستہ روکیں