دہشتگردی کا خاتمہ، پاکستان اور ایران نے لائزون افسران مقرر کر دیئے

ایران کے صدر ابرہیم رئیسی کے بعد پاکستان اور ایران کے تعلقات میں مزید پیشرفت ہوئی ہے۔

ذرائع کے مطابق پاکستان اور ایران نے دہشتگردی کے مشترکہ چیلنج کیخلاف ہاتھ ملا لیے ہیں۔ پاک ایران باہمی سکیورٹی معاہدے پر کام جاری ہے اور لائزون افسروں کی تقرری پرعملدرآمد شروع کر دیا گیا ہے۔

سفارتی ذرائع نے بتایا کہ دونوں ملکوں کے درمیان دہشت گردی سے نمٹنے کیلئے مشترکہ تعاون بہتر بنایا جا رہا ہے۔ دونوں ملکوں نے سرحد پر دہشتگردی کیخلاف مشترکہ کوششیں شروع کر دی ہیں۔ سفارتی ذرائع کا کہنا ہے کہ دونوں ممالک نے پاک ایران سرحد پر انسداد دہشت گردی کیلئے اپنے لائزون افسروں کی تقرری کر دی ہے۔

رواں ہفتے یہ افسر چارج سنبھالیں گے۔ پاکستانی لائزون افسر پاک فوج، ایرانی لائزون افسر پاسدران انقلاب سے تعلق رکھتے ہیں۔ دونوں افسران اپنی اپنی فوج میں کرنل رینک کے ہیں۔ پاک فوج کے لائزون افسر زاہدان ایران میں تعینات ہوں گے۔

ایرانی آئی آر جی سی کے لائزون افسر تربت بلوچستان میں تعینات ہوں گے۔ سفارتی ذرائع نے بتایا کہ دہشتگردی کیخلاف تعاون کے فروغ کیلئے دونوں ممالک سکیورٹی معاہدے پر دستخط کریں گے اور معاہدے کو حتمی شکل دینے کیلئے دونوں ممالک کی وزارت داخلہ کام کر رہی ہیں۔ اس حوالے سے وفاقی وزیر داخلہ محسن نقوی کا دورہ ایران جلد متوقع ہے۔