پاکستان کا اقوام متحدہ سے کالعدم ٹی ٹی پی کے حملے رکوانے کے لئے افغان حکومت پر دباؤ ڈالنے کا مطالبہ

پاکستان نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے دہشت گرد حملے روکنے کیلئے افغان حکومت پر دباؤ ڈالنے کا مطالبہ کردیا۔

تفصیلات کے مطابق پاکستانی مستقل مندوب منیراکرم نے اقوام متحدہ میں افغانستان کے بارے میں سلامتی کونسل کی بریفنگ میں خطاب کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ افغان عبوری حکومت کالعدم ٹی ٹی پی سےتعلقات ختم کرے اور اور کالعدم ٹی ٹی پی کو جدید فوجی سازوسامان ملنے کی تحقیقات کرائی جائیں۔

منیر اکرم نے زور دیا کہ ’اقوام متحدہ سرحد پارسےپاکستان پر حملےروکنےکیلئے دباؤ ڈالے اور کالعدم ٹی ٹی پی کی مالی اعانت کے ذرائع کی نشاندہی کی جائے، جس کی وجہ سے اس کے 50 ہزار جنگجوؤں اور ان کی دہشت گردی کی کارروائیوں میں مدد مل رہی ہے۔‘

پاکستانی مستقل مندوب کا مزید کہنا تھا کہ تحقیق کی جائے کالعدم ٹی ٹی پی نے جدید فوجی سامان کیسے حاصل کیا۔

منیر اکرم نے متنبہ کیا کہ ’اگر عالمی ادارے نے ٹی ٹی پی کی دہشت گردی کو نہ روکا تو ٹی ٹی پی، جسے القاعدہ اور کچھ ریاستی سرپرستوں کی حمایت حاصل ہے، عالمی دہشت گردی کا خطرہ بننے کی صلاحیت رکھتی ہے۔‘