ایرانی دراندازی، چابہار میں ٹریڈ کمیٹی اجلاس چھوڑ کر پاکستانی وفد وطن پہنچ گیا

ایران کی جانب سے پاکستان میں دراندازی پر چابہار میں جوائنٹ بارڈر ٹریڈ کمیٹی کا اجلاس ختم کردیا گیا۔

پاکستانی وفد اجلاس چھوڑ کر واپس وطن پہنچ گیا اور وفد نے چا بہار فری زون فیسٹول میں شرکت سے معذرت کرلی۔

پاکستانی وفد کی قیادت چیف کلکٹرکسٹم آفتاب اقبال میمن کررہے تھے اور 35 رکنی وفد میں ڈی سی گوادر اورنگ زیب بادینی بھی شامل تھے۔

گوادر اور کوئٹہ چیمبر آف کامرس کے نمائندے بھی وفد کا حصہ تھے۔ اس حوالے سے ڈی سی گوادر اورنگ زیب بادینی کا کہنا تھاکہ اسلام آباد سے ہدایت ملنے کے بعد وفد وطن واپس آگیا۔

واضح رہےکہ گزشتہ روز ایرانی سکیورٹی فورسز کی جانب سے پاکستان کی فضائی حدود کی خلاف ورزی کرتے ہوئے بلوچستان میں میزائل اور ڈرون حملےکیےگئے تھے۔

ایرانی سرکاری ٹی وی نور نیوز کی خبر میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ ایرانی سکیورٹی فورسز کی جانب سے پاکستان کے صوبے بلوچستان میں جیش العدل نامی تنظیم کے دو ٹھکانوں پر میزائل اور ڈرون حملے کیے گئے۔

وزارت خارجہ کے مطابق پاکستانی فضائی حدود میں ایرانی حملے کے نتیجے میں دو معصوم بچے جاں بحق اور تین بچیاں زخمی ہوئی تھیں۔

پاکستان نے جواب میں ایران سے اپنے سفیر کو واپس بلانے اور ایرانی سفیر کو ملک بدر کرنےکا اعلان کیا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا تھا کہ ایران کے ساتھ تمام اعلیٰ سطح کے دوروں کو بھی معطل کرنےکا فیصلہ کیا ہے، آنے والے دنوں میں پاکستان اور ایران کے درمیان جاری یا طے شدہ دورے بھی معطل کرنےکا فیصلہ کیا ہے۔