پاکستان نے امریکہ کیجانب سے “خصوصی تشویش کا ملک” قرار دینا مسترد کر دیا

پاکستان نے امریکی محکمہ خارجہ کی جانب سے پاکستان کو “خصوصی تشویش کا ملک” قرار دینا مسترد کر دیا۔

ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ یہ متعصبانہ اور من مانی تشخیص پر مبنی ہے، اس کا زمینی حقائق سےکوئی تعلق نہیں، پاکستان بین المذاہب ہم آہنگی کی بھرپور روایت رکھتا ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق پاکستان نے آئین کے مطابق مذہبی آزادی کو فروغ دینے کے اقدامات کیے ہیں، پاکستان نے اقلیتوں کے حقوق کے تحفظ کے لیے وسیع اقدامات کیے ہیں۔

ترجمان نے کہا ہے کہ مذہبی آزادی کی خلاف ورزی کرنے والے بھارت کو امریکی محکمہ خارجہ کی فہرست سے پھر نکالا گیا. ایسی امتیازی اور یک طرفہ مشقیں نقصان دہ ہیں.

انہوں نے کہا ہے کہ یہ امتیاز عالمی سطح پر مذہبی آزادی آگے بڑھانے کے مشترکہ مقصد کو نقصان پہنچاتا ہے، مذہبی عدم برداشت، زینو فوبیا اور اسلامو فوبیا کا مقابلہ تعمیری مشغولیت اور اجتماعی کوششوں سے کیا جاسکتا ہے۔