بلے کے نشان کی آفر ہوئی تھی لیکن میں نے انکار کردیا، پرویز خٹک

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) پارلیمنٹیرینز کے سربراہ پرویز خٹک نے کہا ہے کہ مجھے بلے کے نشان کی آفر ہوئی تھی لیکن میں نے انکار کردیا۔

پشاور میں میڈیا سے بات چیت کرتے پوئے پرویز خٹک کا کہنا تھا کہ صوبے کے ہر کونے سے پی ٹی آئی پارلیمنٹیرینز میں لوگ آرہے ہیں۔  انہوں نے کہا کہ ہمارا منشور تیار ہوچکا ہے، چند دنوں میں پیش کریں گے، الیکشن مہم جاری ہے اور ہم محنت کررہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ وفاق نے ہمارے حقوق ضبط کیے ہیں، وہ حاصل کرنے ہیں، ضم شدہ اضلاع کے ساتھ بہت زیادتی ہورہی ہے، فنڈز نہیں آرہے۔

پرویز خٹک نے بتایا کہ ہمارے بہت سے آزاد دوست الیکشن لڑ رہے ہیں، آزاد امیدوار کامیابی کے بعد ہمارے ساتھ شامل ہوں گے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ مجھے بلے کے نشان کی آفر ہوئی تھی لیکن میں نے انکار کردیا۔ تاہم پی ٹی آئی پارلیمنٹیرینز کے سربراہ نے یہ نہیں بتایا کہ انہیں یہ آفر کس نے کی۔

سابق وزیر دفاع کا کہنا تھا کہ ہمارے صوبے کے لوگوں کو عمران خان بیوقوف سمجھتے ہیں کہ جو کہوں گا وہ مانیں گے۔

دوسری جانب الیکشن کمیشن نے بھی پرویز خٹک کے بیان پر ردعمل کا اظہار کیا ہے۔ ترجمان الیکشن کمیشن کے مطابق الیکشن کمیشن نے پرویز خٹک کو انتخابی نشان ’بلے‘ کی پیشکش نہیں کی۔

انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن کی طرف سے کسی کو بھی انتخابی نشان بلے کی پیشکش نہیں کی گئی۔ خیال رہے کہ گزشتہ دنوں الیکشن کمیشن آف پاکستان نے انٹراپارٹی انتخابات پارٹی آئین کے مطابق نہ کرانے پر پاکستان تحریک انصاف سے بلے کا انتخابی نشان واپس لے لیا تھا۔