فلسطینی پرچم پر اعظم خان پر جرمانے کیخلاف احتجاج، ذکا اشرف کی برطرفی کا مطالبہ

نیشنل ٹی 20 میچ میں فلسطینی پرچم بلے پر بنوانے پر اعظم خان پر جرمانہ عائد کرنے کے خلاف کراچی کے نوجوانوں نے احتجاج کیا اور پی سی بی مینجمنٹ کمیٹی کے سربراہ کو معطل کرنے کا مطالبہ کیا۔

تفصیلات کے مطابق جماعت اسلامی یوتھ ونگ کے درجنوں کارکنان اعظم خان سے اظہار یکجہتی کیلئے نیشنل اسٹیڈیم کے باہر مظاہرہ کرنے پہنچے تو پولیس کی بھاری نفری وہاں پہنچ گئی۔

شرکا نے کہا کہ اعظم خان کے خلاف جرمانہ واپس نہ کیا گیا تو پی ایس ایل کے موقع پر احتجاج کریں گے۔ جماعت اسلامی کراچی یوتھ ونگ کے ہاشم ابدالی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اگر اعظم خان کے خلاف کیا گیا فیصلہ واپس نہ لیا تو احتجاج کا سلسلہ ملک گیر سطح پر بڑھانے کا فیصلہ کریں گے۔

شرکا نے ہاتھوں میں بینرز اٹھا رکھے تھے جن پر ذکا اشرف کی برطرفی کے نعرے درج تھے۔ ہاشم ابدالی نے کہا کہ جرمانہ واپس نہ لینے کی صورت میں تمام تر حالات کی ذمہ دار پی سی بی کی انتظامیہ ہوگی۔

انہوں نے ذکا اشرف سے فوری طور پر اپنے عہدے سے مستفی ہونے کا بھی مطالبہ کیا۔

دسرے جانب جماعت اسلامی پاکستان کے سینیٹر مشتاق احمد نے مطالبہ کیا ہے کہ کرکٹر اعظم خان کے خلاف جرمانہ کرنے والے آفیشلز کے خلاف ایکشن لیا جائے۔ نیشنل ٹی ٹوئنٹی کپ کے دوران کرکٹر اعظم خان کو جرمانہ کرنے پر جماعت اسلامی کے سینیٹر مشتاق احمد خان کا ردعمل سامنے آگیا۔

سینیٹر مشتاق احمد کا کہنا ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے آفیشلز نے جرمانہ لگا کر مجرمانہ حرکت کی۔

انہوں نے کہا کہ کرکٹر اعظم خان کو جرمانہ کرنے پر پاکستانی عوام کے جذبات مجروح ہوئے۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ مجرمانہ حرکت کرنے والے آفیشلز کے خلاف فوری ایکشن لیا جائے۔ سینیٹر مشتاق احمد نے سوال اٹھایا کہ پی سی بی نے کس قانوں کے تحت اعظم خان کو پریشرائز کرکے جرمانہ کیا؟ ان کا کہنا تھا کہ فلسطین کی حمایت عالمی آواز اور انسانی ضمیر کی پکار ہے۔