گلگت میں نئے ائیرپورٹ کی تعمیر کیلئے کارروائی جاری ہے، سول ایوی ایشن اتھارٹی

سول ایوی ایشن اتھارٹی کا کہنا ہے کہ گلگت میں نئے ائیرپورٹ کی تعمیر کیلئے فزیبلٹی رپورٹ تیار کر لی گئی ہے۔ سی اے اے کے چیف آپریٹنگ آفیسر نے یہ بیان سپریم اپیلیٹ کورٹ گلگت میں پی آئی اے پروازوں سے متعلق سوموٹو کیس کی سماعت کے دوران دیا۔بدھ کے روز گلگت میں پی اے پروازوں اور اے ٹی آر جہاز کی بار بار خرابی پر سوموٹو کیس کی سماعت چیف جج سردار شمیم خان نے کی۔سول ایوی ایشن کے چیف آپریٹنگ آفیسر نے عدالت کو بتایا کہ گلگت ایئرپورٹ کو ہر قسم کے ہوائی جہازوں کے لیے قابل عمل بنانے کے لیے سی اے اے نے پہلے ہی سے سلطان آباد گلگت میں نئے ایئرپورٹ کے قیام کے حوالے سے فزیبلٹی رپورٹ تیار کر لی ہے اور مذکورہ منصوبے کے لیے دلچسپی رکھنے والی کمپنیوں سے ٹینڈر طلب کیے جا چکے ہیں جس پر کارروائی جاری ہے۔

چیف کمرشل آفیسر پی آئی اے نے عدالت کو یہ بھی بتایا کہ گلگت اسلام آباد روٹ ثقافت اور خوبصورتی کی اہمیت کے پیش نظر ایک منافع بخش روٹ ہے، جس کی وجہ سے پی آئی اے حکام علاقے کے لوگوں کے ساتھ ساتھ سیاحوں (مقامی اور بین الاقوامی) کی سہولت کے لیے اسکردو ایئرپورٹ جیسے بین الاقوامی پروازوں اور دیگر جمبو ہوائی جہازوں کو گلگت ایئرپورٹ پر چلانے کا ارادہ رکھتے ہیں، لیکن موجودہ ایئرپورٹ کے محدود رن وے کی وجہ سے پی آئی اے گلگت ایئرپورٹ پر ایسی پروازیں چلانے سے قاصر ہے۔ چیف جج نے ان تمام معاملے کے پیش نظر سول ایوی ایشن اتھارٹی اسلام آباد کو ہدایت کی کہ وہ گلگت میں نئے ایئرپورٹ کے قیام کا عمل تیز کرے اور آئندہ سماعت پر اس حوالے سے تازہ رپورٹ پیش کرے۔