ایران اور پاکستان ہمیشہ سے اسرائیل کی آنکھوں میں کانٹا بن کر چبھتے ہیں, فلسطین کانفرنس

امت واحدہ پاکستان کے زیراہتمام لاہور کے مقامی ہوٹل میں قومی فلسطین کانفرنس منعقد ہوئی۔ کانفرنس کی صدارت امت واحدہ پاکستان کے سربراہ علامہ محمد امین شہیدی نے کی۔

کانفرنس میں ملک بھر کی مذہبی سیاسی جماعتوں سمیت سول سوسائٹی، وکلا، طلبہ اور اقلیتی نمائندوں سمیت زندگی کے مختلف شعبہ جات سے تعلق رکھنے والی شخصیات نے ہاتھوں میں ہاتھ ڈال کر فلسطینیوں سے یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے الجہاد الجہاد کے نعرے بلند کئے۔

کانفرنس کے شرکاء کا کہنا تھا کہ حماس عالم اسلام کے ماتھے کا جھومر ہے، حماس پہ کسی قسم کی پابندی قبول نہیں کریں گے۔ امت واحدہ پاکستان کے سربراہ علامہ محمد امین شہیدی نے خطاب کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ تمام اسلامی ممالک عالمی یومِ یکجہتی فلسطین منانے کا اعلان کریں۔

مقررین نے مزید کہا کہ او آئی سی میں شامل ممالک کے مطالبات نے دنیا کو بتایا ہے کہ یہ کتنے بے حمیت ہیں اور مظلوم فلسطینیوں سے اتنے لا تعلق ہیں کہ ان میں سے جن ممالک نے اسرائیل کو تسلیم کر لیا ہے، ان میں اتنی بھی ہمت نہیں کہ اسرائیلی سفیر کو اپنے ملک سے نکال باہر کرتے یا کم از کم اسرائیل سے اپنے سفیروں کو واپس بلاتے۔

مسلم حکمرانوں نے اتنی جرات اور شعور کا بھی مظاہرہ نہیں کیا کہ دنیا کو پیغام دیتے کہ دنیا والو! اسرائیل اور اس کے ساتھی ممالک کی مصنوعات کا بائیکاٹ کرنے کی عملی جدوجہد میں فلسطین اور حماس کے مجاہدین کا ساتھ دو اور ساڑھے تین ہزار سے زائد شہید ہونیوالے بچوں کے لہو سے اپنی وفاداری کا اعلان کرو۔

انہوں نے مزید کہا کہ جب تک فلسطین کی سرزمین مکمل طور پر آزاد نہیں ہوتی اور فلسطینی مظلوم عوام اپنے ازلی اور غاصب دشمن اسرائیل کے مقابلہ میں کھڑے ہیں، دنیا کا کوئی باحمیت مسلمان ان کی حمایت سے دستبردار نہیں ہو سکتا، چاہے جان دینی پڑے یا دنیا چھوڑنی پڑے۔

آج پاکستان کی طرف سے یہ پیغام دنیا بھر میں جا رہا ہے کہ یہ عظیم الشان اجتماع فلسطینی مظلوم عوام کیساتھ ہے۔ اگر ان کیلئے جان و مال کی قربانی دینے کی ضرورت پڑی تو ہم حاضر ہیں۔

سربراہ امت واحدہ کا کہنا تھا خون کے آخری قطرہ تک فلسطینیوں کی حمایت جاری رکھیں گے۔ علامہ امین شہیدی نے کہا کہ کربلائے غزہ میں اسرائیلی یزیدیت کیخلاف ملتان، اسلام آباد، کراچی، کوئٹہ، پشاور سمیت ملک بھر میں قومی کانفرنسز کا انعقاد کریں گے۔

کانفرنس کے اعلامیے میں کہا گیا کہ فلسطینیوں کی بنیادی ضروریات کیلئے عالمی فلسطین فنڈ قائم کیا جائے اور حکومت پاکستان اپنا سیاسی کردار ادا کرے۔