پرائیویٹ سکولوں کی رجسٹریشن کیلئے ایس او پیز طے کر لئے گئے

محکمہ تعلیم نے پرائیویٹ سکولوں کی کیٹگری پر کام شروع کر دیا ہے، فیس کے تناسب سے سکولوں کی رجسٹریشن فیس مقرر ہو گی۔

بلڈنگ فٹنس سرٹیفکیٹ کی معیاد ایک سے بڑھا کر دو سال کرنے پر غور کیا جا رہا ہے۔ پرائیویٹ سکولوں کی رجسٹریشن کیلئے بلڈنگ فٹنس سرٹیفکیٹ لینا لازمی ہو گا۔

ذرائع کے مطابق پرائمری سکول کیلئے 6 کلاس رومز اور ایلیمنٹری کیلئے 9 کلاس روم ہونا لازمی ہیں۔ ہائی سکول کیلئے 12 اور ہائیر سیکنڈری سکول کیلئے 15 کلاس رومز ہونا لازمی ہوگا، جبکہ پچاس طلباوطالبات کیلئے ایک بیت الخلا ہونا چاہیے۔ کمروں میں کھڑکیاں، ایگزاسٹ اور پنکھوں کیساتھ ہوادار ہونا ضروری ہے۔

چھتیں آر سی سی، آر بی سی یا گارڈر کی بنی ہونی چاہیں۔ بانس، مٹی کا ڈھانچہ، لکڑی کا شہتیر یا مٹی والی چھت کی اجازت نہیں۔ باؤنڈری وال کی اونچائی 6 فٹ ہوگی اور اس پر ریزر وائر کی تنصیب ہوگی۔ پختہ فرش کیساتھ ایمرجنسی ایگزٹ گیٹ ہونا لازمی ہے۔ چار ہزارسےکم فیس پرائیویٹ سکول ایک لاکھ روپے۔

دس ہزار سے کم فیس والاسکول دو لاکھ روپے، بیس ہزار سے کم فیس والے سکولز اڑھائی لاکھ روپے انسپکشن فیس دیں گے۔ بلڈنگ فٹنس سرٹیفکیٹ کے بغیر کسی بھی سکول کو رجسٹریشن نہیں کی جائیگی۔