خاتون پولیس افسر نے قبضہ مافیا سے بیوہ کا پلاٹ واگزار کرادیا، سوشل میڈیا پر تعریفیں

خاتون پولیس افسر نے فرض شناسی کی مثال قائم کرتے ہوئے عدالتی حکم پر قبضہ مافیا سے پلاٹ  واگزار کروا کر بیوہ کے حوالے کردیا۔

اسسٹنٹ سپرنٹنڈنٹ آف پولیس نایاب رمضان نے ضلع مانسہرہ میں عدالتی حکم کی تعمیل کرتے ہوئے بیوہ کو 14 سال بعد اس کا حق دلوادیا۔ بیوہ کے پلاٹ پر 14 سال سے قبضہ تھا جسے اے ایس پی نایاب رمضان نے چھڑوا کر خاتون کے حوالے کردیا۔

اے ایس پی نایاب رمضان نے میڈیا کو بتایا کہ حق مہر میں دی گئی زمین کا قبضہ عدالت کے حکم پر مسماۃ (ن) کو دلوا دیا گیا۔

انہوں نے بتایا کہ شنکیاری سے پولیس نفری، تحصیلدار اور حلقہ پٹواری کے ہمراہ عدالت کے حکم پر موقع پر جاکر زمین کا قبضہ مسماۃ (ن) کو واپس دلوایا گیا۔ اے ایس پی نایاب کا کہنا تھا کہ خواتین کے مسائل کو خواتین پولیس افسران بہتر طریقے سے حل کر سکتی ہیں، بیوہ کی فریاد پر ڈی پی او مانسہرہ کی ہدایت پر قانون کے مطابق کاروائی کی گئی۔

ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر ظہور بابر آفریدی نے بتایا کہ مانسہرہ میں اب تک سینکڑوں ایسے مسائل حل کیے جا چکے ہیں جو کافی عرصے سے حل طلب تھے ، زمینوں پر قبضہ کرنے والوں کے خلاف خصوصی مہم جاری ہے جس میں درجنوں ملزمان کو گرفتار کیا جاچکا ہے۔

بیوہ کے پلاٹ پر سے قبضہ ختم  کروانے کی پوری کارروائی میں اے ایس پی نایاب رمضان خاتون کے ساتھ  موجود رہیں، اور مخالفین کی مزاحمت کے باجود آخری وقت تک پیچھے نہ ہٹیں اور پلاٹ قبضے سے چھڑوا کر ان کے حوالے کیا۔ ان کےا س دلیرانہ اقدام کو سوشل میڈیا پر خوب سراہا گیا ہے۔