جنوبی وزیرستان : موبائل / 3جی و4 جی سروس معطل، طلبہ اور تاجروں کو مشکلات کاسامنا

وانا: جنوبی وزیرستان لوئر ایند اپر کے بعض علاقوں میں موبائل/ 3جی و4جی سروس معطل، طلبہ اور تاجروں کو مشکلات کاسامنا، وفاقی حکومت فوری طور 3جی/4جی اور موبائل سروس بحال کریں۔ اہلیانِ وزیرستان

گزشتہ کئی روز سے جنوبی وزیرستان لوئر ایند اپر کے بعض علاقوں میں موبائل/ 3جی/ 4جی سروس معطل ہیں، سٹوڈنٹس اور تاجر برادری کو شدید مشکلات کاسامنا ہے

لہذا وفاقی حکومت اور عسکری قیادت فوری طورپر 3جی/4جی اور موبائل سروس بحال کریں۔

اہلیانِ وزیرستان کا مطالبہ۔اس حوالے سے ضلع لوئر جنوبی وزیرستان اے این پی کے سنئیر رہنماء نور زمان وزیر نے کہا کہ موبائل سروس معطل ہونے کی وجہ سے دونوں اضلاع جنوبی وزیرستان لوئر اینڈ اپر کے مختلف علاقوں کا دنیا سے مواصلاتی رابطہ منقطع ہوگیا ہے جس کی وجہ سے طلبہ، تاجر برادری اور عام شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے.

شہری اپنے عزیز و اقارب سے رابطہ کرنے کے لئے جنوبی وزیرستان لوئر اور اپر کے اونچے پہاڑوں کا رُخ کرتے ہیں۔

اس بابت القا در پبلک سکول تنائی کے پرنسپل شاہ حسین وزیر نے بتایا کہ وہ طلباء کو داخلے کروانے کے حوالے سے دوستوں‌اور رشتہ داروں‌سے رابطےمیں ہوتا تھا تاہم ایک ہفتے سے نیٹ ورک بند ہونے کی وجہ سے وہ ہر چیز سے بے خبر ہیں.

انہوں‌نے کہا کہ علاقے میں‌جب انٹرنیٹ نہیں ہوگا موبائل فون کام نہیں کریگا تو ایسے علاقے میں کون آباد ہوسکتا ہے، حکومت عوام کو سہولیات فراہم کرنے کی جگہ الٹا ان سے دی گئی سہولیات واپس لے رہاہے.

دوسری جانب اپر جنوبی وزیرستان کے علاقہ مکین سے تعلق رکھنے والے ایک دوکاندار اشرف خان محسود نے بتایا کہ علاقے میں لینڈ لائن کی سروس نہیں ہے حکام نے اُپر سے امن وامان کے نام پر پہلے انٹرنیٹ سروس بند کردی گئی ہے اور ہفتہ ہونے کو ہے کہ موبائل نیٹ ورک بند کیا گیا ہے.

انہوں‌نے کہا کہ مجھ سمیت متعدد دکانداروں کو کاروباری لین دین میں‌سخت مشکلات کا سامنا ہے ،ایک طرف اگر بدامنی ہے تو دوسری طرف فون کال کےلئے شمالی وزیرستان کے علاقے رزمک جانا پڑتا ہے.

اس سے قبل جنوبی وزیرستان لوئر اور اپر کے بعض علاقوں میں حکومت کی جانب سے گذشتہ کئی مہینوں‌سے انٹرنیٹ کی فراہمی روک دی گئی ہے.

شعبہ درس وتدریس سے منسلک سراروغہ کے رہائشی رضوان اللہ محسود کا کہنا ہے کہ ہم تو تھری جی فورجی کی بحالی کی امید رکھ رہے تھے اور حکومت نے موبائل نیٹ ورک ہی بند کردیا.

اس حوالے سے وانا سے تعلق رکھنے والے ایڈوکیٹ اجمل وزیر نے کہا اور سوال اٹھایا کہ اس دور جدید میں عام شہریوں کیلئے موبائل اور انٹرنیٹ سہولیات میسر نہ ہونا کہاں کا انصاف ہے؟

انہوں نے مطالبہ کیا کہ جنوبی وزیرستان اپر اور لوئر میں وفاقی حکومت فوری طور پر موبائل سروس اور نیٹ سروس بحال کی جائے تاکہ لوگوں کا ایک دوسرے سے منقطع رابطے بحال ہوجائیں۔

واضح‌رہے کہ جنوبی وزیرستان لوئر اینڈ اپر میں موبائل سروس اورتھری جی فورجی سروس کی بندش اور بحالی کا مسئلہ گذشتہ 3 سالوں سے جاری ہے،

انہوں نے مزید کہا ہے کہ ابھی گذشتہ کئی مہنیوں سے تھری جی فورجی کی سہولت بند ہے جبکہ ایک ہفتے سے وزیرستان کے بعض علاقوں میں موبائل نیٹ ورکس بند کردیئے گئے ہیں۔