تعلیمی پروگرام کے تحت امریکا کا دورہ کرنے والے 25 پاکستانی طلبہ سے پاکستانی سفیر کی ملاقات

امریکا میں پاکستان کے سفیر مسعود خان نے تعلیمی پروگرام کے تحت امریکا کا دورہ کرنے والے 25 پاکستانی طلبہ پر مشتمل گروپ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ اپنے ذہنی افق کو وسعت دینے اور نئی معلومات کے حصول کے لیے اس تعلیمی پروگرام کو ایک موقع کے طور پر استعمال کریں،

رپورٹ کے مطابق سٹڈی آف یو ایس انسٹی ٹیوٹس (ایس یو ایس آئی) پروگرام کا مقصد پاکستان اور امریکا کے درمیان مختلف ثقافتوں کے حامل افراد کے مابین ہم آہنگی اور تعلیمی تعاون کو فروغ دینا ہے، 5 ہفتوں پر مشتمل یہ سالانہ پروگرام 2010 میں شروع کیا گیا۔

پاکستانی سفیر نے مزید کہا کہ 1950 کی دہائی سے لے کر آج تک تعلیم کا شعبہ دونوں ممالک کے درمیان ایک مضبوط ربط رہا ہے۔ انہوں نے طلبہ کے ساتھ ملاقات کے دوران انہیں مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ ان کا انتخاب ہمارے فخر کا باعث ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ معلومات اور مہارتوں کے تبادلے کا عمل ہے اور آپ یہاں سے حاصل کردہ قابل قدر معلومات اپنے ملک میں لے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ دانشورانہ صلاحیتوں کی کوئی حد نہیں ہوتی، آپ جس ماحول جس میں کام کرتے ہیں، آپ کے ساتھی آپ کے تجربے سے براہ راست فائدہ اٹھائیں گے۔

پاکستانی سفیر نے اس امید کا اظہار کیا کہ طلبہ کو جو تجربہ حاصل ہوگا اور امریکا میں اپنے قیام کے دوران انہوں نے جو مشاہدہ کیا ہے وہ اس مشاہدے کی گہرائی کو اپنا سکیں گے۔

سرکاری خبر رساں ادارے کے مطابق انہوں نے طلبہ کو یاد دلایا کہ وہ ایک بھرپور تہذیب کی نمائندگی کرتے ہیں، جو قوم کی تعمیر 75 کے سال اور بہت سی مشکلات سے نمٹنے کی حامل ہے۔

پاکستانی سفیر نے امریکی حکومت اور ایس یو ایس آئی پروگرام کے انعقاد میں شامل افراد کا دونوں ممالک کے درمیان تعلیمی تعاون کو فروغ دینے کے عزم اور تعاون پر شکریہ ادا کیا۔

انہوں نے پاکستانی طلبہ کی میزبانی پر یونیورسٹی آف میساچوسٹس، ایم ہرسٹ اور امریکی مینٹورز کو بھی سراہا۔

اس موقع پر طلبہ نے اپنے تجربات بارے آگاہ کرتے ہوئے انفرادی اور سماجی سطحوں پر نمایاں تنظیمی مہارتوں، ریاستی اور وفاقی سطح پر پالیسیوں کی تشکیل اور ان پر عمل درآمد، بات چیت کا ماحول، تنوع کو اختیار کرنے، شمولیت کا جذبہ، مساوی مواقع کی فراہمی اور اپنے حقوق کا تحفظ کرنے والے باخبر افراد کی موجودگی کو سراہا۔

پاکستانی سفیر نے طلبہ کے مستقبل کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پاک امریکا تعلقات کو مضبوط بنانے کے لیے ان کے مسلسل تعاون کے منتظر ہیں۔