کرم میں قبائلی تنازع جرگے کے ذریعے حل، خلاف ورزی پر 14 کروڑ جرمانہ ہوگا

ضلع کرم میں قبائلی عمائدین کے درمیان طے پانے والے امن معاہدے کے بعد 7 روز سے جاری جھڑپیں ختم ہوگئیں۔ امن جرگے میں فریقین نے ایک سال تک فائر بندی کے معاہدے پر دستخط کرکے تنازع کو حل کیا۔

وفاقی وزیر ساجد طوری کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ کرم میں فائر بندی کا معاہدہ نیک شگون ہے، معاہدے کی خلاف ورزی پر 14 کروڑ روپے جرمانہ ہوگا۔ ساجد طوری کا کہنا ہے کہ معاہدے کے تحت اصل مجرموں تک پہنچنے میں آسانی ہوگی، جہاں واردات ہوگی، مجرموں کا پتہ لگا کر کارروائی کی جائے گی۔

خیال رہے کہ ضلع کرم میں 7 روز سے زمین کے تنازع پر دو قبائل کے درمیان جھڑپیں جاری تھیں، قبائلی جھڑپوں کے دوران فائرنگ کے واقعات میں 13 افراد جاں بحق اور 100 سے زائد افراد زخمی ہوئے۔

ضلع کرم میں قبائلی تنازع کے بعد پیدا ہونے والی امن و امان کی خراب صورت حال کو کنٹرول کرنے کے لیے فوج اور ایف سی کو بھی طلب کیا گیا اور متنازع زمین پر دفعہ 144 نافذ کر دی گئی تھی۔