پی ٹی آئی دور میں بھرتی 1109 انفلوئنسرز کی تنخواہیں روکنے کی سفارش

خیبر پختونخوا کی نگران حکومت نے سوشل میڈیا انفلوئنسرز پروجکیٹ کی سرگرمیاں روک دیں اور صوبائی محکمہ خزانہ کو تنخواہیں روکنے کیلئے خط ارسال کردیا۔

محکمہ تعلقات عامہ کی جانب سے محکمہ خزانہ کو بھیجے گئے خط کے مطابق اے ڈی پی اسکیم کے تحت محکمہ اطلاعات نے 1109 سوشل میڈیا انفلوئنسرز کو تعینات کیا، حکومتی اقدامات اور عوامی آگاہی کے لیے پروجیٹ کا قیام عمل میں لایا گیا تھا، صوبائی اسمبلی کی تحلیل، نگران حکومت کے قیام کے بعد صوبے میں غیرجانبدارانہ انتخابات کا انعقاد ہے۔

خط میں لکھا گیا ہے کہ سوشل میڈیا انفلوئنسرز کا منصوبہ اپنی مطابقت کھو چکا ہے، الیکشن کمیشن نے نئے پروجیکٹس اور بھرتیوں وغیرہ پر بھی پابندی لگا دی ہے تاہم نگران حکومت مذکورہ منصوبے کے اہداف کو پورا کرنے کے لیے قانون، قواعد و ضوابط کا پابند نہیں، منصوبے کا جاری رہنا سرکاری خزانے کے وسائل کا ضیاع ہے۔

خط میں سفارش کی گئی ہے کہ منصوبے کی تمام سرگرمیاں بند ہیں، اسلئے انفلوئنسرز کی تنخواہوں سمیت تمام اخراجات روک دیے جائیں۔ نگران وزیر اطلاعات نے کہا کہ انفلوئنسرز کا کام ایک تھا اور کام کسی اور ایجنڈے پر کررہے تھے، نگران حکومت کو ان انفلوئنسرز کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔