”بارودی مواد کے بارے میں آگاہی انتہائی ضروری ہے”

Share on facebook
Share on google
Share on twitter
Share on linkedin

ڈیرہ اسماعیل خان میں ہلال احمر پاکستان کی جانب سے صحافیوں کے لیئے ایک روزہ تربیتی ورکشاپ منعقد کیا گیا۔

ایک روزہ تربیتی ورکشاپ میں ڈسٹرکٹ پروگرام آفیسر ملک زاہد جمیل نے ڈیرہ میں ” مقامی سطح پر خطرات کی تعلیم اور اس حوالے سے شعور بیداری“ کے موضوع پرٹریننگ کے شرکاء کو آگاہی دی۔

اُن کا کہنا تھا کہ بارودی مواد اور مشکوک اشیاء کے بارے میں آگاہی انتہائی ضروری ہے کیونکہ اس حوالے سے معلومات کی کمی قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع اور عمر بھر کی معذوری کا سبب بن سکتی ہے۔

اس موقع پر صوبائی پروگرام آفیسر صاحبزادہ منظر حسین نے کہا کہ ڈیرہ اسماعیل خان سمیت خیبر پختونخواہ کے متعدد اضلاع میں بارودی مواد کے نقصانات سے آگاہی کے حوالے سے ہلال احمر پاکستان شعور و آگاہی کیلئے مصروف کار ہے۔

انہوں نے کہا کہ 2010کے سیلاب میں پہاڑی علاقوں سے بارودی مواد کی بڑی کھیپ بہہ کر بندوبستی اضلاع میں آئیں اور اب ہر گزرتے دن کے بعد کسی نہ کسی علاقے میں کھیلتے بچوں کی اکثریت اس دھماکہ خیز مواد کا شکار بن کر اپنی جانوں سے ہاتھ دھو رہے ہیں یا پھر عمر بھرکی معذوری کا شکار ہورہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بچوں کو تربیت دی جائے کہ مشکوک کھلونا نما چیز ملنے کی صورت میں اس کے ساتھ چھیڑ خانی اور کھیلنے سے گریز کریں۔ یہ مواد پریشر ککر، موبائل فون، ریڈیو، قلم، گڑیا اور گیند وغیرہ کی شکل میں ہوتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ صحافی اس حوالے سے شعور کی بیداری کے ذریعے قیمتی جانیں بچانے میں اہم کردار ادا کرسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہلال احمر ڈیرہ اسماعیل خان میں صحت عامہ، ایمرجنسی، ایمبولینس سروس، ابتدائی طبی امداد، پینے کے صاف پانی کی فراہمی، معاشی ترقی، بارودی سرنگوں سے متاثرہ لوگوں کی مدد کے منصوبوں پر کام کر رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ تعلیمی اداروں اور متعدد یونین کونسلز میں اس بارے رضاکاروں کی بڑی تعداد انسانیت کی خدمت کے جذبہ کے تحت کام کر رہی ہے اور اس حوالے سے رضاکاروں کی تربیت کا عمل مستقبل میں بھی جاری رکھا جائے گا۔اس موقع پر ایک فورم بھی تشکیل دے دیا گیا تاکہ آئی ای ڈیز واقعات پر نظر رکھنے کے ساتھ ساتھ اس کی روک تھام پر کام کیا جا سکے۔