ضلع کرم، طالبہ قتل کیس میں مزید چھ ملزمان گرفتار

Share on facebook
Share on pinterest
Share on twitter
Share on linkedin
Share on whatsapp

ضلع کرم کے سرحدی علاقے پیواڑ میں زیادتی کا نشانہ بننے کے بعد قتل ہونے والی پانچ سالہ طالبہ گل سکینہ قتل کیس میں مزید چھ افراد کو گرفتار کرلیا گیا جن کے ڈی این اے کے نمونے لیبارٹری ٹیسٹ کیلئے لاہور بھجوا دیے گئے

ڈی پی او ضلع کرم رحیم شاہ کے مطابق کیس میں گرفتار افراد کی تعداد آٹھ ہو گئی ہے جن سے تحقیقات جاری ہیں، ڈی این اے نمونے لیبارٹری ٹیسٹ کیلئے لاہور بھجوا دیے گئے ہیں اور جلد حقائق کے منظر عام پر آنے کی توقع ہے۔

دوسری جانب پاک فوج 73 بریگیڈ کے کمانڈر بریگیڈیئر نجف عباس اور کمانڈنگ آفیسر کرنل محمد جاوید الیاس اعوان نے بھی سرحدی علاقے پیواڑ کا دورہ کیا ہے اور مقتول بچی کے خاندان کے افراد اور متعلقہ سکول کے عملے سے ضروری معلومات اکھٹے کیں۔

اس موقع پر فورسز کے افسران کا کہنا تھا کہ معصوم بچی کے قتل میں ملوث عناصر سزا سے نہیں بچ سکتے اور اس قسم کے واقعات کی روک تھام کے لئے تعلیمی اداروں سمیت منصوبہ بندی کی جارہی ہے۔

یاد رہے کہ 19 نومبر کو دنوں ضلع کرم کے سرحدی علاقے پیواڑ غنڈی خیل میں سرکاری سکول کے پانچ سالہ طالبہ گل سکینہ  زیادتی کا نشانہ بنائے جانے کے بعد قتل کردی گئی تھی جبکہ ڈرامہ رچانے کیلئے بچی کی لاش کو چھوٹے سے تالاب میں پھینک دیا گیا تھا۔

رشتہ داروں نے کئی گھنٹے تلاش کے بعد لاش کو تالاب سے نکال دیا تھا، بعد ازاں میڈیکل رپورٹ سے پتہ چلا کہ بچی کو زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کیا گیا ہے۔

گزشتہ روز قتل کے اس اندوہناک واقعے کے خلاف طلبہ اور وکلاء برادری نے الگ الگ احتجاجی مظاہرے کیے اور ملوث ملزم کو کیفر کردار کردار تک پہنچانے کا مطالبہ کیا۔