پاکستان کے معاشی چیلنج سے واقف ہیں، معیشت کو بہتر دیکھنا چاہتے ہیں، امریکہ

امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ پاکستان کے معاشی چیلنج سے واقف ہیں، ہم پاکستان کو بہتر معاشی پوزیشن پر دیکھنا چاہتے ہیں۔

امریکا کا یہ بیان ایسے وقت سامنے آیا ہے جب عالمی بینک نے پاکستان کے لیے 1 ارب 10 کروڑ ڈالر کے قرضوں کی منظوری آئندہ مالی سال تک مؤخر کر دی ہے۔

ترجمان امریکی محکمہ خارجہ نیڈپرائس نے واشنگٹن میں  پریس بریفنگ میں کہا کہ جانتے ہیں پاکستان عالمی اقتصادی اداروں کے ساتھ رابطے میں ہے۔ نیڈپرائس کا کہنا تھا کہ پاکستان کو بہتر معاشی پوزیشن پر دیکھنا چاہتے ہیں، جہاں ممکن ہو پاکستان کی سپورٹ کرتے ہیں، دوطرفہ رابطوں میں ان موضوعات پر بات چیت ہوتی ہے۔

خبر ایجنسی کے مطابق ترجمان امریکی محکمہ خارجہ نے کہا کہ  پاکستان کے ساتھ تکنیکی نکات پر پات چیت ہوتی ہے، وزارت خارجہ،خزانہ، وائٹ ہاؤس اور دیگر بھی پاکستان کی میکرو اکنامک استحکام پر بات کرتے ہیں۔

واضح رہے کہ ورلڈ بینک نے پاکستان کے لیے 1ارب 10 کروڑ ڈالر کے قرضوں کی منظوری مؤخر کردی ہے۔ ورلڈ بینک نے پاکستان کے لیے قرض کی منظوری آئندہ مالی سال تک مؤخر کی ہے۔ ورلڈ بینک نے درآمدات پر فلڈ لیوی لگانے کی بھی مخالفت کی ہے۔

خیال رہے کہ پائیدار معیشت کے لیے ورلڈ بینک کے قرض کی مالیت 45 کروڑ  ڈالر تھی، اس کے علاوہ سستی توانائی کے لیے 60 کروڑ ڈالرکا قرض بھی مؤخر کیا گیا ہے۔ ورلڈ بینک کے ترجمان کا کہنا ہے کہ پائیدار معیشت کے لیے بورڈ ڈسکشن مالی سال 2024 میں متوقع ہے جب کہ سستی توانائی کے لیے قرض بھی اگلے مالی سال منظور کیا جاسکتا ہے۔