سال 2022ء، قومی اسمبلی کی ریکارڈ قانون سازی، 62 بلز منظور

قومی اسمبلی سیکریٹریٹ نے ایوان کی سال 2022ء کی کارکردگی رپورٹ جاری کردی، جس کے مطابق 2022ء میں عوام کی فلاح و بہبود کے لیے قومی اسمبلی میں ریکارڈ قانون سازی کی گئی.

اس سال قومی اسمبلی نے قانون سازی کے ساتھ ساتھ پارلیمانی سفارت کاری کے محاذ پر اہم سنگ میل عبور کیے۔ قومی اسمبلی سیکریٹریٹ کے مطابق قومی اسمبلی کے ایوان نے سال 2022ء میں قانون سازی کے شعبے میں غیر معمولی کارکردگی کا مظاہرہ کیا.

رپورٹ کے مطابق جنوری 2022ء سے دسمبر 2022ء تک قومی اسمبلی میں 47 سرکاری بلز اور 15 پرائیویٹ ممبر بلز منظور کیے گئے، ان میں 38 بلز ایکٹ آف پارلیمنٹ بن چکے ہیں۔

بتایا گیا ہے کہ قومی اسمبلی کی جانب سے جو نمایاں قانون سازی کی گئی ان میں الیکشن بل، رحمت العالمینﷺ اتھارٹی بل، نیشنل ہائی وے سیفٹی بل، پاکستان میڈیکل اینڈ ڈینٹل کونسل بل، کرمنل لاء بل، پاکستان ایکسپورٹ اینڈ امپورٹ بل، قومی احتساب بل، پاکستان ٹوبیکو بل، اینٹی ڈمپنگ ڈیوٹیز بل، کیپٹل ڈویلپمنٹ اتھارٹی بل، پٹرولیم بل، غیر ملکی سرمایہ کاری اور اسلام آباد میں بلدیاتی انتخابات بل شامل ہیں۔

رپورٹ کے مطابق سال 2022 میں مختلف امور پر ایوان میں 25 قراردادیں منظور کی گئیں، قومی اسمبلی سیکریٹریٹ کو اراکین کی جانب سے 3751 سوالات موصول ہوئے ان میں سے 1004 جوابات دیے گئے، کل 183 توجہ دلاؤ نوٹس موصول ہوئے ان میں سے 71 ایوان میں پیش کیے گئے اور 43 پر بحث ہوئی۔