پشاور: بلدیاتی نمائندوں کا پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ

پشاور میں بلدیاتی نمائندوں نے پشاور پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا۔ جس کی قیادت نور غلام آفریدی رہنما چیئرمین اتحاد کمیٹی صوبہ خیبر پختونخوا و صوبائی نائب صدر جماعت اسلامی یوتھ خیبر پختونخوا نے کی۔

مقررین میں انتظار خلیل چیئرمین عوامی نیشنل پارٹی، ولی محمد چیئرمین عوامی نیشنل پارٹی، عطاء اللہ چیئرمین پاکستان تحریک انصاف، آفریدی خان چیئرمین جمعیت علماء اسلام (ف)، حاجی محمد جمیل چیئرمین جمعیت علماء اسلام (ف)، محمود الحسن خان چیئرمین پی پی پی، حاجی ارشاد چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی، ناصرہ عبادت رہنماء خواتین ونگ پشاور سٹی، پرویز اقبال رہنماء اقلیت ونگ، ملک طارق چیئرمین پاکستان مسلم لیگ نون موجود تھے۔

مقررین مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ خیبر پختونخوا کے بلدیاتی نمائندوں نے حکومت کی جانب سے یقین دہانی کے باوجود فنڈز اور اختیارات کی عدم منتقلی کے خلاف احتجاجی تحریک چلانے کا اعلان کر دیا ہے، بلدیاتی انتخابات کا ایک برس مکمل ہونے پر 19 دسمبر کو صوبہ بھر میں یوم سیاہ آج منایا جارہا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ 31 مارچ کو دوسرے مرحلے کے انتخابات ہوئے تھے، اس تاریخ پر بھی یوم سیاہ منائینگے.

بلدیاتی نمائندوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی صوبائی حکومت نے سوائے جھوٹ اور دھوکے کے منتخب بلدیاتی نمائندوں کو اور کچھ نہیں دیا، وزیر اعلیٰ نے ہمیں لالی پاپ دیے، فنڈز سال گزرنے کے باوجود ریلیز نہیں کیے گئے.

انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ نے 15 دن کا وقت لیا تھا، مہینہ ہونے والا ہے کوئی سنجیدگی نہیں دکھائی گئی جبکہ ہائیکورٹ میں کیس زیر سماعت ہے.

انہوں نے کہا کہ تمام تر اختیارات ہم سے لیے گئے، تحریک انصاف دراصل خود نا انصافی پر یقین رکھتی ہے، وفاقی حکومت کے خلاف بقایا جات نہ دینے پر بیان بازی کرنے والے خود اپنے صوبوں میں کیا ناروا سلوک رکھا ہے۔ اسکو کون پوچھے گا، صوبائی حکومت نے عوامی مینڈیٹ کا مزاق اُڑایا ہے۔